Voice of Asia News

بھارتی فوج نے جنوبی کشمیر کے حاجن قصبے میں احتجاجی شہریوں پر فائر کھول دیا

سری نگر(وائس آف ایشیا) بھارتی فوج نے جنوبی کشمیر کے حاجن قصبے میں احتجاجی شہریوں پر فائر کھول دیا جس کے نتیجے میں5 افراد زخمی ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق نہتے شہریوں نے حاجن میں بھارتی فورسز کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ فوجی اہلکاروں نے مظاہرین پر پیلٹ اور گولیاں چلائیں گئیں جن میں 4 پیلٹ لگنے سے اور ایک کو گولی لگنے سے زخمی ہوئے۔عینی شاہدین کے مطابق بھارتی فوج کی 13 آر آر کی گشتی پارٹی ڈانگر محلہ اورپرے محلہ سے گزررہی تھی تواس پر پتھراؤکیا گیا ۔جوابی کارروائی میں فوج نے مشتعل ہوکر ٹیرگیس اور پیلٹ کی بوچھاڑ کی ، جس سے ان بستیوں میں جمع رکھی گئی 20گھاس کے ڈھیروں میں آگ لگ گئی۔اس دوران گاؤں میں افراتفری مچ گئی اور فورسز نے آگ بجھانے کے لئے فائر بریگیڈ عملہ کو بھی اجازت نہیں دی۔ لوگ مشتعل ہوئے اور انہوں نے نہ صرف فوج پر شدید پتھراؤ کیا بلکہ فائر اینڈ ایمرجنسی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچایا اور عملے کی بھی مارپیٹ کی۔اس کے بعد فوج نے پیلٹ کا بے تحاشا استعمال کیا اورایک نوجوان کو گولی بھی مار دی۔کیمونٹی ہیلتھ سنٹر حاجن کے مطابق اسپتال میں 5زخمیوں کو لایا گیا جن میں نعیم احمد میر، جو گھٹنے میں گولی لگنے سے زخمی ہوا تھا کو برزلہ منتقل کیا گیا۔مقامی لوگوں کے مطابق فوج نے گھروں میں گھس کر مکینوں کو مارپیٹ کی اور قیمتی اشیا کو بھی اڑا لیا ۔ اسکے علاوہ پرے محلہ، بونہ محلہ اور کھوسہ محلہ میں گھروں کو توڑپھوڑ کی گئی اور کوآپریٹو سوسائٹی کو بھی لاکھوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا۔ ادھر شوپیان پولیس نے ٹریٹوریل آرمی اہلکار عرفان احمد ڈار کے قتل کیس میں ملوث ایک شخص کو گرفتار کر کے ملوثین کی شناخت کرنے کا دعوی کیا ہے۔پولیس کا دعوی ہے کہ دوران تحقیقات اس بات کا انکشاف ہوا کہ اس قتل میں صدام پڈر ساکن ہیف ،بلال ساکن ہیف ،توصیف ساکن گڈبگ ملوث ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے