Voice of Asia News

بہت کچھ کرلیا اب ہم کسی کے لیے نہیں لڑیں گے، ترجمان پاک فوج

راولپنڈی(وائس آف ایشیا ) پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے عزم کا اعادہ کیا ہے کہ سی پیک کی سلامتی کو کسی قسم کے خطرات لاحق نہیں ہوں گے،افواج پاکستان کی ذمہ داری سی پیک کو تحفظ فراہم کرنا ہے،عوام پاکستان کے اداروں پر اعتماد رکھیں ہم عوام کومایوس نہیں کریں گے۔ انہوں نے آج میڈیا کو بریفنگ کے دوران سی پیک کے حوالے سےایک سوال پرکہا کہ سی پیک اقتصادی منصوبہ ہی نہیں بلکہ پاک چین تعلقات کے درمیان ایک معاشی تعلق بھی ہے۔سی پیک سے متعلق کچھ چیزیں ریاست کی سطح پرہورہی ہیں۔حکومت پاکستان نے چین کے ساتھ ملکر سی پیک کی ترقی کیلئے بہترین کام کیا ہے۔ جبکہ افواج پاکستان کی ذمہ داری سی پیک کوسکیورٹی فراہم کرنا ہے۔الحمداللہ ہم سکیورٹی کی حد تک مکمل کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سی پیک کی سلامتی کو خطرات لاحق نہیں ہوں گے۔ افواج پاکستان کی ذمےداری سی پیک کو تحفظ فراہم کرنا ہے۔تاہم مخالف قوتیں پاکستان کوکمزورکرنا چاہتی ہیں۔ ہم متحد ہوکر ان کامقابلہ کریں گے۔انہوں نے کہاکہ عوام پاکستان کے اداروں پر اعتماد رکھیں ہم عوام کومایوس نہیں کریں گے۔ میجرجنرل آصف غفورنے کہاکہ کلبھوشن کے ساتھ فیملی کی ملاقات کیلئے کوئی دباؤ نہیں تھا اگردباؤ ہوتاتوقونصلررسائی دیتے۔لہذاکوئی دباؤ نہیں تھا۔کلبھوشن کے مقدمے پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔کلبھوشن کی فیملی کے ساتھ ملاقات سے مقدمے پرکوئی اثرنہیں پڑے گا۔انہوں نے کہاکہ کلبھوشن کی اپیل پرآرمی چیف شواہد کی روشنی میں فیصلہ کریں گے۔انہوں نے کلبھوشن کی فیملی ملاقات پرانڈیا میں منفی پروپیگنڈا پرکہاکہ پاک انڈیا تعلقات کاایک ماضی ہے۔ ہم اچھا کام بھی کریں گے توبھی اس کام کوسراہانہیں جائے گا۔انہوں نے ایک سوال پرکہاکہ ہم نے کلبھارتی جاسوس بھوشن کیلئے انسانی ہمدردی کی بنیادپرملاقات کروائی انڈیا کوسراہنا چاہیے تھا دنیا بھر میں اس عمل کوسراہا گیاہے۔انہوں نے نوازشریف اور مریم نوازکے فوج پرالزامات کے سوال پرکہاکہ یہ سیاسی سوال ہے جبکہ پاک فوج سیاسی الزامات کاالگ سے جواب نہیں دیناچاہتی۔انہوں نے کہاکہ ہمارہی پہلی ترجیح ملک میں امن واستحکام ہے ۔پاک فوج سیاسی سرگرمیوں پرکوئی ردعمل نہیں دیناچاہتی۔سیاسی معاملات پرجواب نہیں دیں گے بلکہ عام خود فیصلہ کریں گے۔ڈی جی آئی ایس پی آرنے ایک سوال ”نوازشریف سازش میں فوج کے ملوث ہونے کے اشارے دیتے ہیں“کے جواب میں کہاکہ اگرکوئی سازش ہے تواس کے ثبوت سامنے لائے جائیں کہ کیا سازش ہے۔اسی طرح انہوں نے ایک مزیدسوال پرکہا کہ خواجہ سعد رفیق کاپاک فوج سے متعلق بیان انتہائی غیرذمہ درانہ ہے۔پاک فوج میں اعلیٰ نظم وضبط ہے۔آرمی میں ایک اشارے پرسپاہی مرمٹنے کیلئے تیارہوجاتے ہیں۔آرمی چیف کے حکم پرجوہم قربانیاں دے رہے ہیں۔افواج پاکستان اپنی عزت پرسمجھوتہ نہیں کرسکتی۔انہوں نے کہاکہ خواجہ سعد رفیق کابیان آئین کی خلاف ورزی ہے۔ایسے بیانات سے ارتعاش پیداہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے