Voice of Asia News

خطرناک’ ریاستی دہشت گردی‘ مودی47 سے لیکر ابتک حقائق کا پتہ لگائیں:گیلانی

سرینگر(وائس آف ایشیا )کل جماعتی حریت کانفرنس (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے بھارتی وزیر اعظم مسٹر نریندر مودی کے ’من کی بات ‘ میں بیان کہ ’’ہمیں مل کر دہشت گردی کا مقابلہ کرنا چاہیے‘‘ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کو ختم کریں گے کی رٹ لگانے سے دہشت گردی کا خاتمہ نہیں کیا جاسکتا ، اس کیلئے سب سے پہلے یہ جاننا ضروری ہے کہ دہشت گردی کیا ہے اور کون اسے بڑھاوا دے رہا ہے۔ گیلانی نے کہا کہ دہشت گردی کا ارتکاب فرد کرے، کوئی گروپ کرے یا اس میں کوئی اسٹیٹ ملوث ہو،بہرحال ان تینوں میں سب سے زیادہ خطرناک ’’ریاستی دہشت گردی ہوتی ہے‘‘ کیونکہ اس کیلئے فوج، پولیس، انتظامیہ اور تمام ریاستی وسائل استعمال میں لائے جاتے ہیں اور اس کا دائرہ کافی وسیع ہوتا ہے۔ حریت چیئرمین نے بھارتی وزیر اعظم کے بیان کو دھوکہ اور فریب قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ بھارت ہے جس نے 1947میں جموں کشمیر میں اپنی فوجیں اْتار کر ایک نہتی قوم کو اپنا غلام بنایا ، 47ء سے لے کر آج تک 6 لاکھ انسانی زندگیوں کو موت کے گھاٹ اْتار دیا ، 7ہزار سے زائد خواتین کی عزتوں اور عصمتوں کے ساتھ کھلواڑ کیا ، 10ہزار سے زائد نوجوانوں کو حراست میں لینے کے بعد لاپتہ کردیا اور کھربوں روپے کی جائیدادوں کو تباہ وبرباد کردیا ہے۔گیلانی نے کہا کہ بھارتی وزیر اعظم دہشت گردی کے خلاف بڑے بڑے بیانات دیتے ہیں وہ یہ کیوں بھول جاتے ہیں اس کی فوج جموں کشمیر میں قتل و غارت گری میں ملوث ہے۔ انہوں نے کہا بھارت ’’دہشت گردی کے خلاف لڑائی‘‘ کے نام پر جموں کشمیر میں قبرستان کی خاموشی قائم کرنا چاہتا ہے جس کے لیے اس نے اپنی 10 لاکھ مسلح فورسز کو کشمیریوں کو پشت بہ دیوار کرنے کے لیے میدان میں اْتار دیا ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے