Voice of Asia News

کشمیریوں کی زندگیاں بھارتی فورسز کے رحم و کرام پر ہیں ، میر واعظ

سرینگر (وائس آف ایشیا) مقبوضہ کشمیرمیںحریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے شوپیان میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں چھ نہتے شہریوں کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ کشمیر کی صورتحال کشیدہ اور تیزی سے بگڑ رہی ہے ۔انہوںنے کہاکہ بھارتی فورسز نے گزشتہ چند دنوں کے دوران تیرہ سے زائد شہریوں کو شہید کردیا ہے ۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق میر واعظ عمر فاروق نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہاکہ بھارتی فورسز کو مقبوضہ علاقے میں رائج کالے قانون آر مڈ فورسز اسپیشل پاورز ایکٹ کے تحت کشمیریوںکے قتل عام کا لائسنس حاصل ہے اور انکے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاسکتی ۔ انہوںنے کہاکہ بیشتر کشمیریوں کو ضلع شوپیاں میں شہید کیاگیا جہاں فورسز نے سترہ سالہ کشمیری طالبہ صائمہ وانی سمیت آٹھ کے قریب شہریوںکو شہید کردیا ہے ۔میرواعظ نے کہاکہ بچوں کو دودھ پلانے والی مائوں کو بھی نہیں بخشا جارہا اور فورسز کے ہاتھوں نہتے کشمیریوں کا قتل عام روز کا معمول بن چکا ہے ۔ انہوںنے افسوس ظاہر کیاکہ نہتے کشمیریوں کو بھارتی فوج کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے اور انکی زندگیوں کو شدید خطرہ لاحق ہے ۔حریت فورم کے چیئرمین نے کہاکہ جب تک آرمڈ فورسز اسپیشل پاورز ایکٹ جیسے کالے قوانین کو منسوخ نہیں کیاجاتا کشمیریوں کا قتل عام جاری رہے گا ۔انہوںنے انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ وادی کشمیرمیں بھارتی فورسز کی طرف سے بڑے پیمانے پر جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کا سخت نوٹس لیں اورانہیں رکوانے کیلئے بھارت پرد بائو بڑھائیں۔ انہوںنے مقبوضہ علاقے میں نہتے کشمیریوں کے قتل عام میں اضافے پر بھارت کے انسانی حقوق کے کارکنوں، پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا ، ادیبوں ، کالم نگاروں اور سول سوسائٹی کی خاموشی پر افسوس ظاہر کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے