Voice of Asia News

آج کل کے بچوں میں کمپیوٹر کو لے کرپاگل پن کافی بڑھ گیا ہے

لاہور(وائس آف ایشیا)آج کل کے بچوں میں کمپیوٹر کو لے کرپاگل پن کافی بڑھ گیا ہے۔کھیل سے لے کر ہوم ورک تک اپنے سارے کام وہ کمپیوٹر پر ہی کرتے ہیں، لیکن بچوں کا زیادہ دیر تک کمپیوٹر کے سامنے بیٹھنا ان کی صحت کے لئے خطرناک ہو سکتا ہے۔صحت پر برا اثر:کمپیوٹر کے ضرورت سے زیادہ استعمال سے آپ کے بچے کی نیند نہ آنے کے مسئلے سے دوچار ہو سکتا ہے۔ ساتھ ہی وہ کھانے کو لے کر بھی لاپرواہ ہو جاتا ہے۔ دراصل بچے کمپیوٹر میں اتنے مدہوشہو جاتے ہیں کہ ان کو نیند، بھوک وغیرہ کا احساس ہی نہیں ہوتا ہے۔ یہ ایک طرح سے ان کا ایڈکشن بن جاتا ہے۔آنکھوں پر برا اثر:مسلسل بہت دیر تک کمپیوٹر یا لیپ ٹاپ کی سکرین پر دیکھتے رہنے سے آنکھوں پر برا اثر پڑتا ہے، کیونکہ اس سے ریڈی ایشنترنگے نکلتی ہیں۔جو آنکھوں کو نقصان پہنچاتی ہے۔ اس سے ان کی آنکھوں کی روشنی کمزور ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔دماغ پر برا اثر:کمپیوٹر کے مزید استعمال سے بچوں کا دماغ کمزور ہو سکتا ہے۔اس کا اثر ان کی میموری پر پڑتا ہے۔اس سے بچوں میں بعد میں الزائمر کا مسئلہ بھی پیدا ہو پا تی ہے۔سوشل لائف پر برا اثر:ہر وقت کمپیوٹر کے ساتھ بزی رہنے سے بچے باہر جا کر نہیں کھیلتے ہیں۔ جس سے ان کا کوئی سوشل سرکل نہیں بن پاتا ہے اور وہ صرف آپ کے کمپیوٹر کے ساتھ ہی خوش رہتے ہیں۔ بچوں کے لئے بیرون  بہت ضروری ہیں۔ اس سے ان کی صحت تو بنتی ہی ہے، ساتھ ہی دوسرے لوگوں سے ملنے جلنے سے ان کا سماجی ترقی بھی ہوتا ہے۔لیکن کمپیوٹر کی وجہ سے انہیں باہر جاکر کھیلنے میں کوئی دلچسپی نہیں رہتی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے