Voice of Asia News

،روس کے پاس ہتھیارکم نہ تھے، کمزورمعیشت کے سبب روس ٹوٹا:آرمی چیف

کراچی (وائس آف ایشیا) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاہے کہ پاکستان گزشتہ 4 دہائیوں سے کثیرالجہتی چیلنجز سے نبردآزماہے،معیشت کا تعلق تمام شعبہ ہائے زندگی سے ہے، بہترسیکیورٹی نہ ہونے کے باعث امیرملک بھی جارحیت کاشکارہوتے ہیں،روس کے پاس ہتھیارکم نہ تھے، کمزورمعیشت کے سبب روس ٹوٹا۔چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کا سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قومی لائحہ عمل پرعمل درآمد کیلئے جامع کوششوں کی ضرورت ہے،دنیامیں قومی سلامتی اور معاشی استحکام میں توازن کے حصول پرتوجہ مرکوزہے، سلامتی اور معیشت ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں، آج کے دور میں سیکیورٹی ایک وسیع موضوع ہے،ملک میں داخلی سلامتی کی صورتحال میں بہتری آئی ہے۔ان کا کہناتھا کہ ریاست کی رٹ کو درپیش چیلنجزکو شکست دی گئی ہے، پاکستان گزشتہ 4 دہائیوں سے کثیرالجہتی چیلنجز سے نبردآزماہے،معیشت کا تعلق تمام شعبہ ہائے زندگی سے ہے۔ان کا کہناتھا کہ مضبوط معیشتوں نے جارحیت کا بھی سامناکیا ہے ،مختلف عالمی نظریات میں گزشتہ دو دہائیوں کے دوران تبدیلی آئی ، معیشت زندگی کے ہرپہلوپراثراندارہوتی ہے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہناتھا کہ بہترسیکیورٹی نہ ہونے کے باعث امیرملک بھی جارحیت کاشکارہوتے ہیں،عراق کا کویت پر حملہ اس کی مثال ہے،ہم دنیا کے سب سے زیادہ غیر مستحکم خطے میں رہتے ہیں ، شروع سے ہی پاکستان کو کئی بحرانوں کا سامنا رہا ،روس کے پاس ہتھیارکم نہ تھے، کمزورمعیشت کے سبب روس ٹوٹا،امیدکرتاہوں سیمینارکے نتائج سے متعلقہ فریقین استفادہ کریں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے