Voice of Asia News

دنیا بھر میں بیروزگاروں کی تعداد میں34لاکھ کا اضافہ

کراچی (وائس آف ایشیا) اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں 20 کروڑ سے زیادہ افراد بیروزگار ہیں جن میں ایک سال کے دوران 34 لاکھ کا اضافہ ہوا۔عالمی ادارہ برائے محنت ’’ آئی ایل او ‘‘ نے اپنی حالیہ رپورٹ ’’ ورلڈ ایمپلائمنٹ اینڈ سوشل آؤٹ لک 2017ء سسٹین ایبل انٹرپرائزز اینڈ جابز ‘‘ میں متنبہ کیا ہے کہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری ادارے جمود کا شکار ہیں جس کا ترقی پذیر معیشتوں پر برا اثر پڑ رہا ہے جہاں کام کرنے والے ہر دو میں سے ایک فرد ملازم ہے۔ادارے کا کہنا ہے کہ 2016 ء کی بلک آف گلوبل ایمپلائمنٹ کے مطابق نجی کاروباری اداروں میں دو ارب اسی کروڑ سے زیادہ افراد ملازم ہیں جو کل ملازمین کا 87 فیصد ہیں ان میں اوسط درجے کے کاروباری اداروں کے ملازمین بھی شامل ہیں۔ادارے کا کہنا ہے کہ کچھ عرب ملکوں میں نجی شعبے کے کل ملازمین کا 70 فیصد حصہ اوسط درجے کے کاروباری اداروں میں ہے جبکہ صحرائے صحارا کے ملکوں میں کل ملازمین کا 50 فیصد سے زیادہ حصہ نجی شعبے میں ہے۔ادارے کے 130 سے زیادہ ملکوں سے حاصل ہونے والے اعداد و شمار کے مطابق 2008 ء کے عالمی مالیاتی بحران سے قبل بڑی کمپنیوں اور کاروباری اداروں کی نسبت چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں میں ملازمتوں کے مواقع میں تیزی سے اضافہ ہورہا تھا جبکہ 2009 ء کے بعد ان اداروں میں ملازمتوں کے مواقع نہ ہونے کے برابر ہیں جو حکومتوں کو متوجہ کرتا ہے کہ وہ ماضی کی صورتحال واپس لانے کیلئے اقدامات اٹھائیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے