Voice of Asia News

احتساب یا مذاق ، پاناما پیپرز میں شامل 450 افراد کو نہیں چھیڑا جا رہا ، دانیال عزیز

اسلام آباد (وائس آف ایشیا)وفاقی وزیر نجکاری دانیال عزیز نے کہا ہے کہ احتساب کے نام پر عوام سے مذاق کیاجا رہاہے ۔ پاناما پیپرز میں شامل 450 افراد میں سے کسی کو نہیں چھیڑا جا رہا ۔ عمران خان پاناما پیپرز میں سے نام کے پی کے احتساب کمیشن کو کیوں نہیں دیتے ۔ احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ عدالت میں گواہ کے بیانات اور دستاویزات ریفرنس میں دی گئی دستاویزات سے میچ نہیں کرتے ۔ 522 صفحات پیش کئے گئے اور ہر صفحے پر اسحاق ڈار کے وکیل کی طرف سے اعتراض لگا ہے یہ صفحات قانونی شہادت پر پورا نہیں اترتے ۔ فاضل جج نے کہا کہ ان دستاویزات کے حوالے سے حکم دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ قانونی شہادت اور الیکٹرانک ایکٹ کے تحت عدالت میں پیش کی گئی دستاویزات پر ہونے والی کارروائی زیر اعتراض ہے ۔ حیرانگی ہے کہ اسحاق ڈار کا نام پاناما پیپرز میں دور دور تک نہیں ہے اور پہلے دن سپریم کورٹ نے پاناما کے حوالے سے درخواستوں کو فضول قرار دے کر واپس کیا ۔ اس کے بعد قابل سماعت بنا دیا گیا ۔ پاناما میں اسحاق ڈار کا نام نہیں تھا لیکن عوام دیکھیں کہ کس طرح سیاسی انداز میں جس جس کو ٹارگٹ کرنا تھا پاناما کی لپیٹ میں لے لیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ صرف عمران خان کی پٹیشن میں اسحاق ڈار کا نام تھا ۔ سراج الحق اور شیخ رشید کی درخواستوں میں ان کا نام تک نہیں تھا ۔ احتساب عدالت میں یہ سیاسی کیس چل رہا ہے ۔ پھر بھی ہم عدالت کے سامنے پیش ہوئے ہیں ملک کے عوام کو بتایا جارہا ہے کہ احتساب ہورہا ہے ۔ اگر احتساب ہو رہا ہے تو 400 سے زائد نامزد لوگوں کو کیوں نہیں چھیڑا جا رہا ۔ سراج الحق کی 450 افراد کے ناموں والی پٹیشن کو سماعت کے لیے مقرر کیوں نہیں کیا جا رہا ۔ سراج الحق کی نواز شریف کے نام والی پٹیشن کو اٹھا لیا گیا ۔ احتساب کے نام پر عوام کے ساتھ مذاق کیا جا رہا ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے