Voice of Asia News

راجھستان کے گاؤں میں ہندوؤں نے مسلمانوں کو علاقے سے بے دخل کردیا

راجھستان(وائس آف ایشیا)راجھستان میں ہندوؤں نے 20 مسلمان خاندانوں کو گاؤں سے بے دخل کردیا جو خیموں میں رہنے کے ساتھ فاقے کرنے پرمجبور ہیں۔  بھارت کی ریاست راجھستان کے علاقے جیسلمر کے گاؤں میں ہندؤں کی جانب سے 20 مسلمان خاندانوں کو گاؤں چھوڑنے پرمجبور کردیا گیا جس کے بعد 150 افراد پر مشتمل یہ لوگ خیموں میں رہنے پر مجبور ہیں جہاں کھانا پینا اور دیگر ضرورت اشیا کی عدم موجودگی کی وجہ سے ان لوگوں کو زندگی گزارنے کے لئے دشواری کا سامنا ہے جب کہ مقامی انتظامیہ نے  بھی تعصب کا مظاہرہ کرتے ہوئے مسلمانوں کی مدد کرنے سے صاف انکارکردیا۔واضح رہے کہ علاقے سے بے دخل کیے جانے والے مسلمان مقامی فوک گلوکار عماد خان کا خاندان ہے جسے ہندو پنڈت اوراس کے بھائیوں نے یہ الزام لگا کر قتل کردیا تھا کہ اُس نے ہندوؤں کے مذہبی تہوار پرجو بھجن گایا اس میں جان بوجھ کر غلطی کی گئی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے