پاکستان پر ڈرون حملہ ، پاکستان آنے والی امریکی شخصیات کے پروٹوکول ضوابط میں تبدیلی

اسلام آباد ( وائس آف ایشیا)امریکہ کی جانب سے بغیر اطلاع کیے کرم ایجنسی میں ڈرون حملے پر پاکستان نے احتجاج کا فیصلہ کیا ہے اور پاکستانی آنے والی امریکی شخصیات کے لیے پروٹوکول ضوابط بھی تبدیل کردیے گئے ہیں ۔نجی نیوز چینل دنیا نیوز کے مطابق امریکہ کی جانب سے بغیر اطلاع کے کرم ایجنسی میں ڈرون حملے پر پاک امریکہ تعلقات میں کشیدگی اور بد اعتمادی میں مزیداضافہ ہو گیا ہے جس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ پاکستان آنے والی امریکی شخصیات کے لیے پروٹوکول ضوابط تبدیل کردئیے جائیں ،پاکستان آنے والا امریکی افسر جس عہدے کا ہوگا اسے پاکستانی میں اسی عہدے کا افسر ملے گا ۔کمانڈر امریکی سینٹ کام جنرل جوز ف ووٹل نے متعدد بار وزیر دفاع خواجہ آصف سے ملنے کے لیے رابطہ کیا ہے تاہم انہوں نے ملنے سے انکار کردیا ہے ۔دوست ممالک ترکی ،چین اور سعودی عرب کے لیے پروٹوکول قوائد میں نرمی ہو گی۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز امریکہ کی جانب سے کرم ایجنسی میں ڈرون حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں پاکستان میں سابق افغان سفیر ملا عبد السلام ضعیف کے داماد ملا عصمت ضعیف اپنے تین ساتھیوں سمیت جاں بحق ہو گئے ۔