Voice of Asia News

نیند کی کمی انسان میں ڈپریشن سمیت کئی طرح کے عارضوں کو جنم دیتی ہے

لاہور(وائس آف ایشیا)نیند کی کمی انسان میں ڈپریشن سمیت کئی طرح کے عارضوں کو جنم دیتی ہے اور اب سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں اس کا ایک اور نقصان بتا دیا ہے۔  رپورٹ کے مطابق جاپان کے شہر کوبے کے ہانابوسا کلینک کے تحقیق کاروں نے بتایا ہے کہ خواتین نیند کی کمی کا شکار ہوں تو انہیں ماں بننے میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے اپنی تحقیق میں 208 خواتین پر تجربات کیے ۔ انہوں نے ان تمام خواتین سے ان کی نیند کے متعلق کئی سوالات پوچھے، جن میں نیند کا دورانیہ، معیار، نیند کی گولیوں کا استعمال، منشیات کا استعمال وغیرہ بارے سوالات شامل تھے۔سائنسدانوں نے خواتین کی طرف سے ان سوالات کے جوابات کی بنیاد پر انہیں تین گروپوں میں تقسیم کیا۔ ایک گروپ کی خواتین کو نیند کا کوئی مسئلہ درپیش نہیں تھا۔ دوسرے گروپ کی خواتین معمولی دشواری کا شکار تھی جبکہ تیسرے گروپ کی خواتین کو نیند کے بے شمار مسائل لاحق تھے۔ پھر سائنسدانوں نے ان تمام خواتین کے بیضے (Eggs)لے کر لیبارٹری میں ان کی افزائش نسل کی قوت جانچی تو معلوم ہوا کہ پہلے گروپ کی خواتین کے 62.9فیصد بیضوں میں افزائش نسل کی صلاحیت موجود تھی، دوسرے گروپ کی خواتین میں یہ صلاحیت57.1فیصد اور تیسرے گروپ کی خواتین میں 48.4فیصد تھی۔ تحقیقاتی نتائج میں پروفیسر میتھیو واکر کا کہنا تھا کہ ”جو خواتین روزانہ 6گھنٹے سے کم سوتی ہیں ان میں فولیکیولر ہارمون کی پیداوار 20فیصد کم ہوجاتی ہے۔ یہ ہارمون خواتین کی افزائش نسل کی صلاحیت میں بنیادی کردارادا کرتا ہے۔“

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے