Voice of Asia News

امریکی ڈاکٹر کے خلاف جنسی ہراسا ں کے مقدمے میں90خواتین گواہی دیں گی

واشنگٹن(وائس آف ایشیا )امریکا میں ملکی تاریخ میں جنسی ہراسیت کے سب سے بڑے مقدمے کی سماعت ہو رہی ہے۔ مقدمے میں 89 لڑکیاں اور ایک خاتون عرب نڑاد امریکی لاری نصار کے خلاف شہادت دیں گی۔ مِشی گن یونی ورسٹی کا سابق پروفیسر لاری نصار چار مرتبہ سے زیادہ اولمپک کھیلوں میں امریکا کی جمناسٹک ٹیم کا ڈاکٹر رہا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق نصار کی جانب سے جنسی ہراسیت کا شکار ہونے والی لڑکیوں اور خواتین کی تعداد 130 سے 140 کے درمیان ہے۔مذکورہ 90 لڑکیاں اور خاتون میں بعض براہ راست گواہی کے لیے پیش ہوں گی جب کہ بعض اپنے وڈیو کلپس اور بعض اپنی تحریریں عدالت ارسال کریں گی۔نصار کا نشانہ بننے والی خواتین میں امریکی جمناسٹک ٹیم کی نامور کھلاڑی اور اس کے پاس آنے والی عام مریض خواتین شامل ہیں۔متاثرہ خواتین کی گواہی کا سلسلہ گذشتہ منگل سے شروع ہوا اور جمعہ تک 4 روز جاری رہا۔ سماعت کا یہ سلسلہ جاری رہے گا جس کے بعد نصار کے خلاف فیصلہ سنایا جائے گا۔عدالت میں چار روز تک گواہیاں پیش کیے جانے کے دوران نصار کی حالت غیر تھی اور وہ بعض مرتبہ ہذیانی انداز میں رونے لگتا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے