Voice of Asia News

بچے کو سگریٹ نوشی پر مجبور کرنے پر سعودی شہری گرفتار

جدہ (وائس آف ایشیا) سعودی پبلک پراسیکیوشن کے ادارے نے سگریٹ نوشی کے حوالے سے قوانین وضع کرتے ہوئے کہا ہے کہ کم عمر بچوں کو سگریٹ خریدنے کیلئے بھیجنا ۔ انہیں تمباکو نوشی کی ترغیب دینا جرم تصور کیا جائیگا۔ عکاظ اخبار کے مطابق گزشتہ ہفتے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی وہ ویڈیو جس میں ایک شخص اپنی کمسن بیٹے کو زبردستی سگریٹ پلا رہا تھا۔ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پبلک پراسیکیوشن نے مذکورہ شخص کی گرفتاری کے احکامات جاری کرتے ہوئے اس کے عمل کو بچوں کے خلاف قرار دیا۔ مذکورہ ویڈیو کے بعد پراسیکوشن کے ادارے کی جانب سے بچوں کے تحفظ کے قانون کو حتمی بناتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جو شخص یا افراد کم عمر بچوں کے ساتھ بیٹھ کر تمباکو نوشی کریں گے یا انہیں سگریٹ نوشی کی ترغیب دے گا تو انکا یہ عمل قانون شکنی کے دائرے میں آئیگا جس پر باقاعدہ مقدمہ چلایا جاسکتا ہے۔کم عمر بچوں سے سگریٹ خریدوانا بھی خلاف قانون ہے۔ دریں اثناء قانونی مشیر سعد الباحوث نے عکاظ ا خبار سے گفتگو میں کہا کہ بچوں کی حمایت کے قانون کے بارے میں کوئی شق ابھی تک واضح نہیں کہ اس پر کس سزا کا اطلاق ہوتا ہے۔ الباحوث کا کہناتھا کہ یہ عمل عدالت کے دائرہ اختیار میں ہے کہ وہ حالات اور واقعات کا تجزیہ کرکے سزا متعین کرے۔ اس ضمن میں متوقع سزاﺅں کے بارے میں الباحوث کا کہناتھا کہ یہ عدالت کی صوابدید پر ہے کہ وہ ایسے شخص کو جو بچوں کےساتھ غیر مناسب سلوک روا رکھتے ہوئے پایا جائے اسے بچوں کی کفالت سے دور کردیا جائے ۔ علاوہ ازیں کوڑے اور جیل کی سزا بھی دی جاسکتی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے وائرل ہونے والی وڈیو میں جس شخص کو دکھایا گیا تھا اس سے تحقیقات جاری ہیں۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے