Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر میں خواتین کو ہراساں کرنے کے واقعات میں اضافہ

سرینگر (وائس آف ایشیا)مقبوضہ کشمیر میں خواتین کو ہراساں کرنے کے واقعات میں اضافہ ہو گیا ہے۔ کلگام اور شوپیاں میں سادہ لباس فوجی لڑکیوں اور خواتین کی چوٹیاں کاٹنے لگے۔شمالی اور مغربی بھارت میں نامعلوم افراد کے ذریعہ خواتین کو بیہوش کرکے ان کی چوٹیا ں کاٹنے کی سنسنی خیز لہر کشمیر پہنچ گئی ہے۔ پولیس کے مطابق گزشتہ ماہ جموں صوبے میں 100اور سرینگر سمیت کئی اضلاع میں اب تک 50 ایسے واقعات رونما ہوئے ہیں ۔ایک مزدور اور ایک خاتون کولوگوں نے پکڑا جن پر الزام تھا کہ وہ لڑکیوں کی چوٹیاں کاٹتے ہیں، لیکن پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں کا دماغی توازن ٹھیک نہیں ہے۔ ان واقعات سے شہروں اور قصبوں میں خوف کی لہر پھیل گئی ہے اور عوامی حلقے حکومت پر تنقید کررہے ہیں۔وزیراعلی محبوبہ مفتی نے پولیس کے سربراہ شیش پال وید سے کہا ہے کہ وہ ترجیحیِ بنیادوں پر اس سنسنی خیز لہر کا سدباب کریں۔ پولیس نے ملزمان کا سراغ فراہم کرنے والے کے لئے چھ لاکھ روپے کے انعام کا اعلان کیا ہے ۔کلگام کی ایک پچیس سالہ خاتون نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایامیں باغ سے گھر آرہی تھی کہ کسی نے میرے چہرے پرا سپرے کیا اور میں بے ہوش ہوگئی، گھر میں آنکھ کھلی تو میں نے دیکھا کہ میری چوٹی کٹی ہوئی تھی۔چوٹی کاٹنے کا پہلا واقع بھارتی ریاست راجستھان بیکانیر میں 23جون کو رونما ہوا تھا۔ گزشتہ چار ماہ کے دوران یہ واقعات دلی، بہار، ہریانہ ، اتراکھنڈ اور اترپردیش میں رونما ہوچکے ہیں۔پولیس کا کہنا ہے کہ بھارت بھر میں ایسی 300وارداتیں رونما ہوچکی ہیں۔ بعض بھارتی شہروں میں یہ افوا تھی کہ چوٹی کاٹنے کے بعد خواتین کی گردن پر ترشول کا نشان دیکھا گیا۔بعض ہندو رہنماؤں نے کہا کہ برے کرم کی وجہ سے بھگوان کا پرکوپ ہے تاہم اکثر علاقوں میں کہا گیا کہ یہ چڑیل کا کام ہے، یہاں تک کہ ذہنی طور پر معذور ایک خاتون کا یو پی میں قتل کیا گیا، تاہم کشمیر میں مخصوص حالات کی وجہ سے پہلا شک فوج یا نیم فوجی اہلکاروں پر کیا جارہا ہے۔ تاہم ابھی تک نہ لوگوں کے ہاتھ کوئی سراغ لگا ہے اور نہ ہی پولیس نے کسی کو گرفتار کیا ہے۔سوشل میڈیا پر بعض حلقوں نے الزام عائد کیا ہے کہ مودی حکومت کی ناقص کارکردگی اور معاشی بدحالی پر جونہی عوامی حلقوں میں بحث چھڑ گئی تو چوٹی کاٹنے کی پراسرار وارداتیں بھارت بھر میں رونما ہونے لگیں اور ہر ٹی وی چنیل کے شام کے بلیٹن کا بڑا موضوع یہی بنا کہ کون کاٹ رہا ہے چوٹیاں۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے