Voice of Asia News

بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی جاری دو کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا

سری نگر(وائس آف ایشیا) شمالی کشمیر کے بانڈی پورہ ضلع میں بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی میں دو کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا ہے ۔رینار بانڈی پورہ میں فوجی آپریشن کے دوران ان نوجوانوں کو گولی مار کر شہید کیا گیا۔ یاد رہے کہ رینار بانڈی پورہ میں بھارتی فوج مسلسل چھ دن سے تلاشی آپریشن جاری رکھے ہوئے ہے ۔ بھارتی فوجی ترجمان کے مطابق جھڑپ میں دو عسکریت پسند شہید جبکہ ایک بھارتی فوجی مارا گیا۔ ادھرعسکریت پسندوں نے لاسی پورہ پلوامہ پولیس پوسٹ پر یو بی جی ایل گرنیڈ داغا جو زور دار دھماکہ کے ساتھ پھٹ گیا۔ دھماکہ میں کسی کے زخمی یا ہلاک ہونے کی اطلاع موصول نہیں ہوئی ۔ بھارتی فوج نے آس پاس کے علاقوں کومحاصرہ میں لے لیاگیا ہے۔جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیاں میں بھارتی فوج کے مظالم کے خلاف شہریوں نے احتجاجی مظاہرہ کیااہگام شو پیاں میں فوج کے ہاتھوں نو جوانوں کی مارپیٹ کے خلاف لوگوں نے زور دار احتجاج کرتے ہوئے اہگام پلوامہ روڈ پر کئی گھنٹوں تک ٹڑیفک کی آمد و رفت کے لئے بند کر دیا جس کے نتیجے میں اس سڑک پر در جنوں گاڑیاں در ماندہ ہو کر رہ گئی ۔ شوپیان ضلع کے اہگام علاقے میں صبح لوگوں نے اس وقت سڑکوں پر نکل کر فوج کے ہاتھوں تین مقامی نوجوانوں کوشدید مار پیٹ کرنے کے خلاف زبردست احتجاج کر کے اہگام پلوامہ روڑ پر دھرنا دیکر واقعے کے خلاف زبردست احتجاج کیا۔احتجاجی لوگوں نے بتایا اہگام علاقے میں قائم 44RRسے وابستہ ایک پارٹی گاؤں میں داخل ہو کر میوہ باغات میں کام کر رہے 3 مقامی نوجوانوں جن میں بلال احمد ،محمد شفی اور عبد المجیدشامل ہیں کو بنا کسی وجہ کے پکڑ کر انکی شدید مارپیٹ کی ۔معلوم ہوا ہے کہ فوج کی جانب سے مبینہ مارپیٹ کی اطلاع جوں ہی گاؤں والوں کو ملی تومقامی آبادی نے جن میں مرد و زن سڑکوں پر نکل کرواقعے کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے۔ اس دوران مظاہرین نے اہگام پلوامہ روڑ پر کئی گھنٹوں تک دھر دیکر ٹریفک کی نقل و حمل کو روک کرملوث اہلکاروں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کر رہے تھے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے