Voice of Asia News

پیاس میں کمی کے لیے چائے اور کافی کو زیادہ سود مند قرار

لاہور(وائس آف ایشیا)ماہرین نے پیاس میں کمی کے لیے مشروبات کے بجائے چائے اور کافی کو زیادہ سود مند قرار دیا ہے۔ آسٹریلوی ماہرین نے ایک نئی تحقیق میں یہ ثابت کیا ہے کہ چائے اور کافی کا استعمال پینے کے مشروبات کی نسبت پیاس میں زیادہ کمی کا باعث ہوتا ہے۔ تحقیق کار ڈاکٹر سپیرو ٹینڈس نے بتایا کہ پچھلے 30سالوں سے بوتلوں کا استعمال ایک فیشن بن چکا ہے جس کو نوجوان نسل میں مقبولیت حاصل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہمارے جسم کو روزانہ۲لیٹر تک محلول کی ضرورت ہوتی ہے اور اس کے لیے ضروری نہیں کہ وہ پانی ہی ہو بلکہ یہ کافی اور چائے بھی ہو سکتی ہے۔ وکٹوریہ کی لاٹروب یونیورسٹی سے تعلق رکھنے والے ماہر ڈاکٹر سپیرو ٹینڈس کے مطابق جسمانی ضرورت کے بہتر پانی کا وافر مقدار میں استعمال درست نہیں ہے. انہوں نے دن میں آٹھ گلاس پانی کا استعمال جسم کے لیے فائدے مند قرار دیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آج سے 30سال قبل پلاسٹک بوتلیں بالکل نظر نہیں آتی تھیں جبکہ آج یہ صرف فیشن بن چکا ہے۔ ڈاکٹر سپیرو ٹینڈس نے بتایا کہ ہمارا اس تحقیق کا مقصد لوگوں کو اس بات سے آگاہ کرنا ہے کہ پانی کے بجائے چائے اور کافی کا استعمال جسم میں پیاس کی کمی کا باعث بنتا ہے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے