Voice of Asia News

کھلاڑی اور فنکار کس سیاسی پارٹی کو ووٹ دیں گے : محمد قیصر چوہان

ووٹ ایک قومی امانت ہے جس کے درست استعمال سے ہی جمہوری نظام کو فروغ ملتا ہے اورقوموں کی ترقی ،استحکام اور خوشحالی کو ممکن بنایا جاتا ہے۔جمہوری نظام میں رائے دہندگان کی اہمیت اپنی جگہ مسلمہ ہے۔ عوام ہی طاقت کا اصل سرچشمہ ہیں اور عوام اپنے ووٹ کی طاقت سے اقتدار کا فیصلہ کرتے ہیں۔ ووٹ جمہوری نظام کی مضبوطی میں بنیادی اہمیت رکھتا ہے اورجن معاشروں میں رائے عامہ کو اہمیت دی جاتی ہے وہی معاشرے ترقی کرتے ہیں لہٰذا عوام کو قومی جذبہ سے سرشار ہو کر ووٹ ڈالنے کا فریضہ سر انجام دینا چاہئے۔ تعلیم یافتہ معاشروں میں عوام کو بخوبی احساس ہوتا ہے کہ ان کا ووٹ ملک کے لیے کتنا اہم ہے، ان کی ذرا سی غفلت کتنے بھیانک نتائج کا سبب بن سکتی ہے۔ بلاشبہ بہترین طرزِ حکمرانی اور جمہوریت ہی عوام کے تمام مسائل کا حل ہے۔ سسٹم کو گالیاں دینے، اسے کوسنے کے بجائے سسٹم کو موثر اور فعال بنائیں، جمہوری نظام میں جو خامیاں ہیں انہیں دور کرنے کیلئے ہر پاکستانی اپنا کردار ادا کرے۔پاکستان کے سپورٹس مین اور فنکار کس سیاسی جماعت کو ووٹ دیں گے اس حوالے سے وائس آف ایشیاء نے ملک کے نامور کھلاڑیوں اور فنکاروں سے جوگفتگو کی ہے وہ قارئین کی خدمت میں حاضر ہے۔
سنوکر کے سابق عالمی چمپئن محمد یوسف نے کہا ہے کہ ووٹ چونکہ قوم کی امانت ہے اسی لئے آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا اترنے والے اُمیدواروں کو ہی ووٹ دوں گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو پیرس اور دبئی بناکر غریب عوام کو خوشحال بنانے کے دعویدار حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کی بدولت بے روزگاری ،غربت ، جہالت ، لوڈشیڈنگ اور غیر ملکی قرضوں میں بے پناہ اضافہ ہو اہے لہٰذا اس بار عوام الیکشن میں آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا اترنے والے اُمیدواروں کو ہی ووٹ دیں اور ووٹ دینے سے قبل ان سے علاقہ کے مسائل حل کروانے کیلئے حلف بھی ضرور لیں۔سابق عالمی چمپئن محمد یوسف نے کہا کہ پاکستان کو بنے 70 برس سے زائد کا عرصہ ہوگیاہے لیکن شہریوں کوپینے کا صاف پانی سمیت دیگر ضروریات زندگی کی بنیادی سہولیات میسر نہیں ہیں ،ملک کی نوجوان نسل تیزی سے منشیات سمیت دیگر سماجی برائیوں میں مبتلا ہو رہی ہے میری عوام سے اپیل ہے کہ اس بار الیکشن میں ایسے اُمید واروں کو ووٹ دیکر کامیاب کرائیں جو پارلیمنٹ میں جا کر ایسے کام کریں جس کے نتیجے میں عوامی مسائل حل ہوں ،پوری دُنیا میں پاکستانی پاسپورٹ کی عزت ہو،عدم برداشت کا کلچر ختم ہو،ماں ،بہن ،بیٹی کی عزت ہو،ہر شہری خود کو محفوظ تصور کرے۔
پاکستان ہاکی ٹیم کے سابق کپتان حنیف خان نے کہا ہے کہ ووٹ قومی امانت ہے جس کے درست استعمال سے ہی ملک ترقی وخوشحالی کی راہ پر گامزن ہوسکتاہے لہٰذا عوام الیکشن میں دیانتدار اور اہل قیادت کا انتخاب کریں کیونکہ ایماندار قیادت ہی ملک کو در پیش چیلنجز سے نجات دلا سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی اکثریت اُمیدواروں کی کارکردگی سے سخت نالاں ہے میں نے اپنی زندگی میں پہلی بار عوام کو اپنے علا قے کے مسائل حل نہ ہونے پر طاقتور اُمید واروں کے سامنے کھڑے ہو کر اُونچی آواز میں اُنہیں کھری کھری سناتے ہوئے دیکھا ہے یہ اس بات کی دلیل ہے کہ اب عوام میں شعور بیدار ہوچکا ہے اسی لئے میں سمجھتا ہوں کیاس بار الیکشن میں ٹرن آؤٹ کم رہے گا۔سابق اولمپین نے کہا کہ عمران خان ایک اچھا انسان ہے مگروہ اپنے نظریات سے ہٹ گیا ہے اور وہ مفاد پرست سیاستدانوں کے ہاتھوں یرغمال بن چکا ہے اگر عمران خان چلے ہوئے کارتوسوں کی بجائے نوجوانوں کو پارٹی ٹکٹس دیتا تو کرپٹ اور نااہل سیاستدانوں سے تنگ عوام کی اکثریت اس کے ساتھ کھڑی ہوتی ۔انہوں نے کہا کہ آزمائے ہوئے لوگوں کو ساتھ ملا کر عمران خان ملک میں تبدیلی نہیں لا سکتے کیونکہ تبدیلی صرف نظریات سے ہی آتی ہے اور عمران خان نظریاتی سیاست اپنے ہاتھوں سے دفن کر چکے ہیں۔
کامن ویلتھ گیمز میں گولڈ میڈل جیت کر پاکستان کا پرچم بلند کرنے والے پہلوان انعام بٹ نے کہا کہ بدقسمتی سے کسی بھی حکومت نے ملکی کھیلوں کو فروغ دینے کیلئے کام نہیں کیا ،ملک کی تمام سیاسی جماعتوں کے اُمیدواروں نے ہر الیکشن کے موقع پر اپنے اپنے علاقوں میں سپورٹس کمپلیکس بنانے کے وعدے کئے لیکن کسی نے بھی ان پر عمل نہیں کیا ،لہٰذا میری تمام کھلاڑیوں سے اپیل ہے کہ وہ اس بار الیکشن میں ایسے اُمیدواروں کو ووٹ دیں جو تحریری طور پر اپنے حلقے میں سپورٹس کمپلیکس بنانے کی یقین دہانی کرائیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی نوجوان نسل تیزی سے منشیات کے استعمال سمیت دیگر سماجی برائیوں میں مبتلا ہو رہی ہے ملک کے مستقبل کے معماروں کو تباہی سے بچانے کیلئے ضروری ہے کہ جو بھی نئی حکومت بنے وہ ترجیحی بنیادوں پر ملک بھر میں سپورٹس کمپلیکس بنائے تاکہ نوجوانوں کو صحت مند انہ سر گرمیوں کی جانب راغب کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ گوجرانولہ سپورٹس مین اس بر الیکشن میں اُن اُمید واروں کو ووٹ دیں گے جو گوجرانولہ میں بین الاقوامی میعار کی ریسلنگ اور ویٹ لیفٹنگ اکیڈمی بناکر دینے کی یقین دہانی کرائیں گے۔
پی کے 75 سے شیر کے نشان پر الیکشن لڑنے والے مسلم لیگ (ن) کے اُمید وار اسکواش کے سابق ورلڈ چمپئن قمر زمان نے کہا ہے کہ انتشار،الزام ،دھرنا اور یوٹرن سیاست کے بانی عمران خان لینڈمافیا،شوگر مافیا،مفاد پرستوں اور لوٹوں کے ساتھ ملکر ملک وقوم کی تقدیر نہیں بدل سکتے ،ملکی تقدیر کا فیصلہ ایمپائر کی انگلی سے نہیں بلکہ عوام کے انگو ٹھے سے ہوگا،25 جولائی کے دن پاکستان کی ترقی وخوشحالی کے دُشمن اور سازشی عناصر کو محب وطن لوگ ووٹ کی طاقت سے عبرت کا نشان بنادیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی ترقی و خوشحالی مسلم لیگ (ن) کا طرہ امتیاز ہے ہم جھوٹ اور بے بنیاد الزامات کی سیاست کے بجائے عوام کی بے لوث خدمت کرتے ہیں جبکہ تحریک انصاف کی سیاست انتشار، الزام تراشی ،گالی گلوچ ،توڑ پھوڑ ،جھوٹ اور یو ٹرن کے گرد گومتی ہے ،عمران خان خیبر پختونخوا ہ کے عوام کی تقدیر نہیں بدل سکے ،پی ٹی آئی اپنے دورہ اقتدار میں صوبے میں نئی یونیورسٹی ،نیاء کالج ، نیاء ہسپتال اور کوئی نیاء اسپورٹس کمپلیکس تک نہیں بنا سکی جبکہ نوجوان نسل کو روزگار بھی فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے ،تحریک انصاف کے مقابلے میں مسلم لیگ (ن) نے پنجاب سمیت ملک بھر میں بلا امتیاز ترقیاتی کا کروائے جو ہماری عوام دوستی کا منہ بولتا ثبوت ہیں ۔ اسکواش کے سابق ورلڈ چمپئن قمر زمان نے کہاکہ میں مسلم لیگ (ن) کی قیادت کا بے حد مشکور ہوں جہنوں نے مجھے پی کے 75 صوبائی حلقہ سے ٹکٹ دیا ہے ،میں الیکشن جیت کر اپنے حلقے میں گرلز اینڈ بوائز کالج ، ہسپتال اور اسپورٹس کمپلیکس بناؤں گا ۔
سنوکر کے سابق عالمی چیمپئن محمد آصف نے کہا ہے کہ 70 برسوں میں کوئی بھی سیاسی جماعت ملک وقوم کی تقدیر نہیں بدل سکی ،موجودہ حالات میں پاکستان کو دہشت گردی ،انتہا پسند ی ،کرپشن ،بے روز گاری ،لوڈشیڈنگ ،مہنگائی جیسے مسائل کا سامنا ہے میں سمجھتا ہوں کہ پاکستان کو ان مسائل سے صرف اور صرف عمران خان ہی نجات دلا سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں کھیلوں کا بنیادی انفراسٹرکچر تباہ ہو چکا ہے،غیر ملکی کھلاڑی پاکستان آکر کھیلنے سے گر یزاں ہیں اگر عمران خان وزیر اعظم بن جاتے ہیں تو وہ اپنی خدا داد صلاحیتوں کے بل بوتے پر ملک بھر میں کھیلوں کا نیا انفراسٹرکچر تعمیر کریں گے اور ملک کو امن کا گہوارہ بناکر ایسا ماحول بنائیں گے کہ تمام کھیلوں کی غیر ملکی ٹیمیں پاک سر زمین پر کھیلنے میں فخر محسوس کریں گی لہٰذا میں عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ اس مرتبہ وہ بلے کے نشان پر مہر لگا کر عمران خان کو وزیر اعظم بنوائیں،میں بھی ووٹ بلے کو ہی دوں گا۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر رانا نوید الحسن نے کہا ہے کہ پاکستان پر ستر برس تک حکمرانی کرنے والے حکمرانوں نے غریب عوام کوبے روزگاری ،غربت ، جہالت ،انتہا پسندی ،دہشت گردی ، لوڈشیڈنگ اور غیر ملکی قرضوں سمیت دیگربے پناہ مسائل میں پھنسا دیا ہے ،موجودہ صورتحال میں صرف اور صرف عمران خان ہی واحد اُمید کی کرن دکھائی دیتے ہیں اس لئے میں پچیس جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگاکر ملک میں تبدیلی کی بنیاد رکھوں گا۔انہوں نے کہا کہ عمران خان محب وطن انسان ہے جو ملک وقوم کی تقدیر بدلنے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے اگر عوام نے اپنے ووٹ کی طاقت سے عمران خان کی وزیر اعظم بنا دیا تو وہ پانچ برس میں کرپشن اور دہشت گردی کی لعنت سے پاک کرکے امن کا گہوارہ بنا دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تمام کھیلوں کا بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے لیکن میرٹ کے قتل عام اور اقرباء پروری کی وجہ سے وہ ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے اگر عمران خان حکومت بنانے میں کامیاب ہوگئے تو دُنیا بھر کے کھیلوں کے میدانوں میں ایک بار پھرسے پاکستان کا سبز ہلالی پرچم سر بلند ہو گا۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے دراز قد سابق فاسٹ باؤلر شبیر احمد نے کہا ہے کہ ستر برسوں میں تمام حکمرانوں نے اپنے مفادکیلئے قانون سازی کی جس کے سبب قائد اعظم کا پاکستان مسائلستان بن چکا ہے لیکن خوشی کی بات یہ ہے کہ برسوں بعد اب عام آدمی میں شعور بیدار ہو اہے لہٰذا ووٹرز کو چاہئے کہ وہ اپنے حلقے کے اُمیدواروں کا پچیس جولائی سے قبل کڑا احتساب کریں تاکہ وہ الیکشن جیتنے کے بعد پارلیمنٹ میں جا کر ملک وقوم کے وسیع ترمفاد میں ایسی قانون سازی کریں جس سے پاکستان ترقی اور غریب عوام خوشحالی کی شاہراہ پر گامزن ہو سکے ۔ خانیوال ایکسپریس کے نام سے مشہور فاسٹ باؤلر شبیر احمد نے کہا کہ ہر الیکشن سے پہلے اُمید وار اپنے حلقے میں جا کر لوگوں کو سبز باغ دکھاکر ووٹ حاصل کرکے اسمبلیوں میں پہنچ جاتے ہیں پھراگلے الیکشن میں ہی وہ دوبارہ حلقے میں نظر آتے ہیں ،میں سمجھتا ہوں کہ جب تک لوگ اپنے حلقے کے اُمید واروں کا الیکشن سے قبل احتساب نہیں کریں گے تب تک اآن کے درینہ مسائل حل نہیں ہوں گے ۔انہوں نے مزید کہا کہ دُنیا بھر میں عوامی مسائل بلدیاتی نظام کے ذریعے ہی حل ہوتے ہیں ،پاکستان میں بلدیاتی ادارے تو موجود ہیں لیکن بلدیاتی نمائندوں کے پاس اختیارات نہیں ہیں ،جب تک بلدیاتی نظام کو مضبوط اور فعال نہیں بنایا جاتا گراس روٹ لیول پر عوام کے مسائل حل نہیں ہو سکتے ۔
رستم پاک وہند عمر بٹ پہلوان نے کہا ہے کہ 25 جولائی کو ہونے والے انتخابی دنگل میں کسی بھی سیاسی جماعت کو سپورٹ نہیں کر رہا البتہ اپنا ووٹ ذاتی تعلق کی بنیاد پر دوں گا،عمران خان نے موروثی سیاست کو ختم کرکے نظریاتی سیاست کو پروان چڑھاکر نوجوانوں کو آگے لانے کا نعرہ لگایا لیکن انہوں نے لوٹوں کی فیکٹری لگا کرپٹ لوگوں کو ساتھ ملا لیا ہے ،کپتان نے الیکشن کیلئے نظریاتی کارکنوں کو نظر انداز کرکے بے وفا ،گیس وبجلی چوروں اور بنکوں سے قرض معاف کرانے والے سیاستدانوں کو ٹکٹس دے کر نظریاتی سیاست کو دفن کردیا ہے ،اسی میں سمجھتا ہوں کہ سیاسی دنگل میں عمران خان کامیابی حاصل نہیں کرپائیں گے جبکہ مسلم لیگ(ن) نے ختم نبوت کے قانون میں ترمیم کرکے اپنی عزت اور وقار کھو دیا ہے لہٰذا یہ دونوں سیاسی جماعتیں پاکستان کو فلاحی اسلامی ریاست نہیں بنا سکتی۔پاکستان کے عالمی شہرت یافتہ پہلوان محمدعمر بٹ نے کہا کہ لوٹوں اور کرپٹ لوگوں کے ساتھ کوئی بھی پارٹی ملک میں تبدیلی نہیں لا سکتی ،تبدیلی صرف نظریاتی سیاست کو پروان چڑھا کر ہی لائی جا سکتی ہے ،بدقسمتی سے ملک کی تمام سیاسی جماعتیں صرف دولت مندوں کو ہی پارٹی ٹکٹ جاری کرتی ہیں جس دن نظریاتی کارکن الیکشن جیت کر پارلیمنٹ میں پہنچے گا اُسی دن ملک وقوم کی تقدیر بدلنے کا وقت شروع ہوگا۔
پاکستان ہاکی ٹیم کے سابق اولمپین گول کیپر قمر ضیاء نے کہا کہ ووٹ قومی امانت ہے جس کے استعمال سے ہی قوموں کی ترقی ،استحکام اور خوشحالی کو ممکن بنایا جاتا ہے اس لیے مرد وخواتین اپنا بھر پور و موثر کردار قومی جذبہ سے سرشار ہو کر سر انجام دیتے ہوئے ایسے اُمید واروں کو ووٹ دیں کر کامیاب کروائیں جو عوامی مسائل حل کرکے ملک وقوم کو حقیقی ترقی کی شاہراہ پر گامزن کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی ،مسلم لیگ (ن) ،مسلم لیگ (ق) ،سمیت دیگر سیاسی جماعتوں کی غلط پالیسیوں نے قائداعظم اور علامہ اقبال کے پاکستان کو کرپشنستان اور مسائلستان بنا کر رکھ دیا ہے ،ملک پر گزشتہ ستر برسوں میں حکمرانی کرنے والے حکمران عوام کو پینے کا صاف پانی فراہم نہیں کرسکے لہٰذا اب ماضی کے روایتی سیاستدانوں سے نجات حاصل کرنے کا وقت آگیا ہے عوام نئے چہروں کو ووٹ دیں اس کیلئے تحریک انصاف بہترین چوائس ہے ۔سابق اولمپین قمر ضیاء نے کہا کہ میں اس مرتبہ الیکشن میں چلے ہوئے کارتوسوں کے بجائے نئے اُمیدواروں کو ووٹ دوں گاکیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ تحریک انصاف ہی عوام کو موجودہ استحصالی اور کرپٹ نظام سے نجات دلاکر تعصب ،جہالت ،کرپشن اور دہشت گردی سے پاک ایک نیاپاکستان بناسکتے ہیں ۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلراور قومی جونیئرسلیکشن کمیٹی کے ممبرعامر نذیر نے کہا ہے کہ میں 25 جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا کر کرپشن سے پاک نئے پاکستان کی بنیاد رکھوں گا ،میں سمجھتاہوں کہ عمران خان ہی وہ واحد لیڈر ہیں جوبے شمارمسائل میں گھرے ہوئے پاکستان کو مشکلات سے نکال کر ترقی وخوشحالی کی شاہراہ پر گامزن کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں عمران خان کی کپتانی میں لندن ، کینیڈا اور امریکا میں چےئریٹی میچز کھیل چکا ہوں ،وہ ایماندار انسان ہیں اگر عوام پاکستان سے کرپشن ،دہشت گردی اور لوڈشیڈنگ سمیت دیگر مسائل کا خاتمہ چاہتی ہے تو پھر 25 جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا کر باریاں لینے والی جماعتوں کو الیکشن والے دن کلین بولڈ کریں،۔انہوں نے کہا کہ کھیل کے میدان کا کامیاب کھلاڑی سیاست کے میدان میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد وزیر اعظم بن کر گرین پاسپورٹ کو دُنیا بھر میں عزت دلا کر ملک وقوم کی تقدیر سنوار دے گا۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق مڈل آڈر بیٹسمین عاصم کمال نے کہا ہے کہ انقلاب چہرے نہیں بلکہ موجودہ کرپٹ اور استحصالی نظام بدلنے سے ہی آئے گا ،ووٹ قوم کی امانت ہے لہٰذا عوام الیکشن میں دیانتدار اور اہل قیادت کا انتخاب کریں۔انہوں نے کہا کہ کرپٹ سیاستدانوں نے ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہونے دیا، کرپٹ سیاستدانوں سے نجات کیلئے ضروری ہے کہ لہٰذا عوام25 جولائی کے دن آئین کے آرٹیکل 62اور63 پر پورا اترنے والے اُمیدواروں کو ووٹ دیں ۔سابق ٹیسٹ کرکٹر عاصم کمال نے کہا کہ ابھی تک کسی بھی اُمید وار کو ووٹ دینے کے بارے میں فیصلہ نہیں کیا جو اُمید وار آئین کے آرٹیکل 62اور63 پر پورا اترے گا اسی کو ووٹ دوں گا۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق آل راؤنڈر منظور الٰہی نے کہا ہے کہ میں نے عمران خان کی کپتانی میں ٹیسٹ اور ون ڈے انٹر نیشنل کرکٹ کھیلی ہے وہ فائٹر کرکٹر تھے اور ایماندار انسان ہیں کھیل کے میدان میں انہوں نے ہمیشہ پاکستان کاسبز ہلالی پرچم بلند کرنے کیلئے جدوجہد کی ،اب عمران خان سیاست کے میدان میں ہیں تو میں پچیس جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا کر ان کے ساتھ ملکر کرپشن سے پاک ایک نئے پاکستان کی بنیاد رکھوں گا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پر حکمرانی کرنے والے سیاستدانوں نے 70 برسوں میں بھی عوام کے مسائل حل نہیں کئے ،موجودہ حالات میں پاکستان جن مسائل کا شکار ہے صرف عمران خان ہی واحد لیڈر ہے جو ملک کو ان مسائل سے نکال کر ترقی کی راہ پر ڈال سکتا ہے ،اگر عوام دُنیا بھر میں سبز پاسپورٹ کی عزت دیکھنا چاہتی ہے تو پھر انہیں عمران خان کو ووٹ کی طاقت سے وزیر اعظم بنوانا ہو گا۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان سلمان بٹ نے کہا ہے کہ پاکستان کو طویل عرصے بعدعمران خان کی شکل میں ایک محب وطن لیڈر ملا ہے اگر عوام نے اس سچے اور کھرے انسان کی قدر کر تے ہوئے پچیس جولائی کو ہونے والے الیکشن کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا کر اس کا ساتھ دیا تو کپتان جی وزیر اعظم بن کر پوری دُنیا میں پاکستان کا کھویا ہوا وقار بحال کرا ئیں گے اور ملک وقوم کی تقدیر سنوار دیں گے۔ٹیسٹ کرکٹر سلمان بٹ نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں ملکی کھیلیں زوال کا شکار ہیں ،اقرباء پروری اور میرٹ کے قتل عام کی وجہ سے تمام کھیلوں کا ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے ،عمران خان کے وزیر اعظم بننے کا سب سے زیادہ فائدہ کھیلوں اور کھلاڑیوں کو ہو گا کیونکہ پھر سب کام میرٹ پر ہوں گے جس سے ملکی کھیلوں کو فروغ ملے گا اور قومی ٹیموں کی کارکردگی میں بہتری آئے گی۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق لیفٹ آرم اسپن باؤلر عبد الرحمان نے کہا ہے کہ پاکستان کو بنے ستر برس سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے لیکن عوام کو ضروریات زندگی کی بنیادی سہولیات میسر نہیں ہیں ،ماضی کے تما م حکمرانوں نے ملکی مفادات پر ذاتی مفاد کو ترجیح دی جس کے سبب آج پاکستان کا ہر بچہ ایک لاکھ سترہ ہزار روپے کا مقروض ہے ،غربت،دہشت گردی ،لوڈ شیڈنگ ،بے روزگاری اور مہنگائی سمیت دیگر بے پناہ مسائل نے غریب عوام کی زندگی عذاب بنا رکھی ہے اگر عوام ان تما م مسائل سے نجات حاصل کرنا چاہتی ہے تو پھر پچیس جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر ثبت کرکے عمران خان کو وزیر اعظم بنوائیں۔سابق ٹیسٹ کرکٹر نے کہا کہ عمران خان نے پاکستان کو کرپشن سے پاک کرنے کی جو مہم شروع کی ہے اس کے نتیجے میں کئی اشرافیہ کے چہروں سے نقاب ہٹ گیا ہے ،ابھی تو شروعات ہے قوم کے سامنے قومی دولت لوٹنے والے اور بہت سے لوگ بے نقاب ہوں گے۔
پاکستان ہاکی ٹیم کے سابق کپتان ذیشان اشرف نے کہا ہے کہ بنی گا لہ ضمیر فروشوں کی منڈی بن گیاہے، عمران خان لوٹوں اور ضمیر فروشوں کے ہاتھوں بے وقوف تو بن سکتے ہیں لیکن وزیر اعظم نہیں بن سکتے ،عمران خان ملک وقوم کی تقدیر نہیں بدل سکتے ،اللہ تعالیٰ نے عمران خان کو خیبر پختونخوا میں حکومت کا موقع دیا تھا لیکن انہوں نے وہاں اچھا پرفارم نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ الزامات اور انتشار کی سیاست کرنے والے عمران خان نے اپنی وفاداریاں تبدیل کرنے والے سیاستدانوں کو پارٹی ٹکٹ دے کر تحریک انصاف کے نظریاتی سیاسی کارکنوں کے دل کو ٹھیس پہنچائی ہے ، عمران خان کا چلے ہوئے کارتوسوں سے تبدیلی کا خواب کبھی بھی شرمندہ تعبیر نہیں ہوگا۔پاکستان ہاکی ٹیم کے سابق کپتان ذیشان اشرف نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے نواز شریف اور شہباز شریف کی قیادت میں ملک بھر میں بلاامتیاز ترقیاتی کام کروا کر قوم کی خدمت کی ہے، عوام کو مہنگائی ،لوڈشیڈنگ ،کرپشن ،بدامنی ،انتہا پسندی اور دہشت گردی سمیت دیگر مسائل سے کافی حد تک نجات دلانے میں کامیاب ہوئی ہے اگر (ن) لیگ کو آزادی کے ساتھ کام کرنے دیا جاتا تو عوام کو لوڈشیڈنگ کے جن سے مکمل طور پر نجات مل جاتی،اب عوام 25 جولائی کے دن اپنی محرومیوں کے خاتمے کیلئے شیر کے نشان پر مہر ثبت کرکے ملک سے الزامات اور انتشار کی سیاست کو ہمیشہ کیلئے ختم کردیں۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے فاسٹ باؤلر محمد آصف نے کہاکہ 70 سال تک پاکستان پر حکومت کرنے والوں نے پاکستانی عوام کو محرمیوں اور پسماندگی کے سوا کچھ نہیں دیا ، غربت بڑھنے کی وجہ سے ڈھائی کروڑسے زائد بچوں کو سکول میسر نہیں ہے ،کراچی سمیت ملک بھر کے لوگ پینے کے صاف پانی سمیت علاج معالجے کی بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں،کرپٹ حکمرانوں نے پاکستان کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کا غلام بنا دیا ہے ،بے روز گاری ،دہشت گردی ،لوڈشیڈنگ اور مہنگائی نے غریب عوام کی زندگی عذاب بنا رکھی ہے اگر عوام ان مسائل سے نجات چاہتی ہے تو پھر 25 جولائی کوبلے پر مہر لگا کر عمران خان کو وزیر اعظم بنائیں کیونکہ کپتان ہی عوام کو خوشحال بنا کر دُنیا بھر میں سبز پاسپورٹ کی عزت کرائیں گے۔ ٹیسٹ کرکٹر محمد آصف نے کہا کہ میں پاکستان کو امریکا ، کینیڈا ، انگلینڈ ، جرمنی ،آسٹریلیا کی طرح ترقی یافتہ اور عوام کو خوشحال دیکھنا چاہتا ہوں اسی لئے میں پچیس جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا ؤں گا کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ عمران خان ہی پاکستان کو خوشحال بنا سکتا ہے۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر محمد خلیل نے کہا ہے کہ وفاداریاں تبدیل کرنے والے سیاستدان ملک وقوم سے مخلص نہیں ہوسکتے ،یہ مفاد پرست سیاستدان کسی بھی پارٹی میں جا کر تبدیلی یا پھر عوامی فلاح وبہبود کا باعث نہیں بن سکتے کیونکہ اگر ان میں اتنی صلاحیت ہوتی تو یہ لوگ اپنی مدر پارٹیوں میں رہ کر ہی ملک وقوم کی بہتری کیلئے کام کرتے ،ان لوگوں کو صرف اپنا مفاد عزیز ہے اسی لئے تو یہ لوگ الیکشن سے قبل جیتنے والی ٹرین میں سوار ہو جاتے ہیں ۔سابق ٹیسٹ کرکٹرنے کہا کہ ملک میں غربت ، جہالت ، بے روزگاری ، مہنگائی اور بدامنی کے اصل ذمے دار یہی مفاد پرست سیاستدان ہیں جو ہر حکومت کا حصہ رہ کر صرف اپنی تجوریاں بھرتے ہیں اگر ان سیاستدانوں نے ملک وقوم کے مفاد میں کام کیا ہوتا توآج پاکستان آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کا مقرض نہ ہوتا ،ملک میں جہالت ،غربت اور بے روزگاری کا گراف نہ بڑھتا ،انتہا پسندی ،دہشت گردی ،لوڈشیڈنگ اور پانی کا بحران نہ پیدا ہوتا ۔انہوں نے کہا کہ ووٹرز کو چاہئے کہ وہ آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا اترنے والے اُمید واروں کو ہی ووٹ دیں اور کوشش کریں کے الیکشن سے پہلے اُمیدواروں کا کڑا احتساب کریں ۔
پرائڈ آف پرفارمنس اداکار راشد محمود نے کہا ہے کہ مجھے اس الیکشن سے بہت اُمیدیں وابستہ ہیں کیونکہ لوگوں میں شعور بیدار ہوچکا ہے عرصہ دراز بعد غریب عوام بھی جاگیرداروں اوروڈیروں کے سامنے اپنا حق مانگنے کیلئے کھڑی ہو گئی ہے جس سے عام آدمی کے حوصلے بلند ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ میری خواہش ہے کہ ہمارے ملک میں وہ حکومت بنے جو عوام کی فلاح وبہبود اور خدمت کا جذبہ رکھتی ہو، اگر عمران خان روایتی سیاستدانوں کو کنٹرول کرنے میں کامیاب ہوگئے تو اُمید ہے ملک میں تبدیلی آئے گی اور عام آدمی کا معیار زندگی بہتر ہو گا جبکہ پاکستان مسائل کو شکست دے کر ترقی وخوشحالی کی راہ پر گا مزن ہوجائے گا۔
پاکستان کے نامور گلوکار چےئرمین برابری پارٹی اور حلقہ این اے 131 سے اُمید وارجواد احمد نے کہا ہے کہ انقلاب چہرے نہیں بلکہ موجودہ کرپٹ اور استحصالی نظام بدلنے سے ہی آئے گا ، برابری پارٹی ملک کا موجودہ نظام بدلنے کی جنگ لڑ رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو خوشحال بنانے کے دعویدار حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کے سبب بے روزگاری ،غربت، لوڈشیڈنگ،کرپشن اور غیر ملکی قرضوں میں بے پناہ اضافہ ہو اہے لہٰذا میری عوام سے اپیل ہے کہ اس بار الیکشن میں ایسے اُمید واروں کو ووٹ دیکر کامیاب کرائیں جو آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا اترتے ہوں۔ نامور گلوکار جواد احمد نے کہا کہ برابری پارٹی عوام کو مہنگائی ،لوڈشیڈنگ ،کرپشن ،بدامنی ،انتہا پسندی اور دہشت گردی سمیت دیگر مسائل سے نجات دلا کرایک پرُ امن، محفوظ ، خوددار ،ترقی یافتہ پاکستان بنانے کی جدوجہد کر رہی ہے لہٰذا میں عوام اپنی محرومیوں کے خاتمے کیلئیپچیس جولائی کے دن گیٹ کے نشان پر مہرلگائیں۔انہوں نے کہا کہ برابری پارٹینظریاتی سیاست کی قائل ہے اور نظریاتی سیاست کو پروان چڑھا کر ملک سے غربت ،بے روز گاری، کرپشن ،انتہا پسندی اوردہشت گردی کا خاتمہ کرے گی اوراقتدار میں آ کر ملک کو ترقی وخوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے انتخابی ،عدالتی ،معاشی ،تعلیم اور صحت کے نظام سمیت دیگر شعبوں میں اصلاحات لائے گی۔
این اے 55 سے پاکستان تحریک انصاف کے اُمید وار اور معروف گلوکار ابرارالحق نے کہا کہ عمران خان کی بائیس سالہ سیاسی جدوجہد نے کرپٹ سیاستدانوں کو بے نقاب کردیا ہے عوام پچیس جولائی کے دن بلے کے نشان پر مہر لگا کر کرپشن لیگ کی سیاست کو ہمیشہ ہمیشہ کیلئے دفن کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لیڈر عمران خان نے جس طرح کرپشن کے خلاف جنگ لڑی اس کی مثال نہیں ملتی،عوام میں شعور بیدار ہو چکا ہے اب عوام اپنے حقوق کیلئے اُٹھ کھڑے ہوئے ہیں لہٰذااب پی ٹی آئی کو اقتدار میں آنے سے کوئی طاقت نہیں روک سکتی ،عمران خان وزیر اعظم بن کر ملک وقوم کی تقدیر سنوار دیں گے۔انہوں نے کہا کہ پوری قوم جانتی ہے کہ عمران خان ملک اورعوام کی خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں ،تحریک انصاف بنائے گی قائداعظم کا پاکستان، جس میں سبھی کو برابر کے حقوق ملیں گے ،غریب اور امیر میں فرق نہیں رہے گا ،غریب کے بچے بھی اُسی سکول میں تعلیم حاصل کرسکیں گے جس میں امیر کا بچہ پڑھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اقتدار میں آکر عوام کو غیر ملکی قرضوں ،کرپشن ، لوڈ شیڈنگ ،دہشت گردی سے نجات دلا کر عوام کو پینے کا صاف پانی اور روز گار فراہم کرے گی ۔
ملک کی معروف اداکارہ ماہ نور نے کہا کہ مجھے تو 2018کے الیکشن کے شفاف اور غیر جانبدارانہ ہونے کا یقین نہیں ہے ،شفاف الیکشن ملکی ترقی کیلئے بہت ہی ضروری ہیں لہٰذا الیکشن کمیشن عام انتخابات کو شفاف بنانے کیلئے اقدامات کرے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاست میں سچ اور جھوٹ کی تمیز ختم ہو کر رہ گئی ہے کوئی بھی سیاستدان آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا اترتا ہوا نظر نہیں آتا اس صورتحال میں ووٹ دینے کے حولے سے کنفیوز ہوں لیکن ووٹ چونکہ قوم کی امانت ہے لہٰذا میری کوشش ہو گی کہ میرا ووٹ اُس جماعت کو جائے جو ملک وقوم کی خدمت کا جذبہ رکھتی ہوں اور اُس کے منشور میں پاکستان کی ترقی اولین شرط ہو۔
اداکارہ ہنی شہزادی نے کہا ہے کہ پاکستان پر ستر برس تک حکمرانی کرنے والوں نے موروثی سیاست کو فروغ دیکر ملکی دولت لوٹ کر اپنی تجوریاں بھریں لیکن اب عمران خان نے عوام میں شعور اُجاگر کردیا ہے اسی لئے اب عام آدمی جاگیرداروں اور وڈیروں کے سامنے اُٹھ کھڑے ہوئے ہیں لہٰذا اب تبدیلی کا آنا ناگزیر ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ستر برسوں میں پہلی بار عوام کو حکمرانوں اور طاقتور اُمیدواراں سے سوال وجواب کرتے دیکھا ہے یہ تبدیلی کی ابتداہے،میں الیکشن میں پی ٹی آئی کو ووٹ دوں گی کیونکہ عمران خان ہی وہ واحد لیڈر ہیں جو حکومت بنا کر لیٹروں اور چوروں کی تجوریوں سے لوٹی ہوئی ملکی دولت واپس ملک کے خزانے میں جمع کریں گے اور اس دولت سے ملک بھر میں بلا امتیاز ترقیاتی کا م کروائیں گے۔
پاکستان کی پہلی ڈھول بجانے والی فنکارہ اریشمہ مریم نے کہا ہے کہ عوام کے ووٹوں سے پارلیمنٹ میں پہنچنے والے سیاستدانوں نے غریب عوام کی فلاح وبہبود کیلئے کبھی کچھ نہیں کیا ،حکمرانوں کی پالیسیوں سے عوام کے مسائل میں اضافہ ہوا جس کے سبب آج غریب آدمی دووقت کی روٹی کیلئے دھکے کھا رہا ہے اور ان کے بچے تعلیم کے حصول کیلئے بھیک مانگ رہے ہیں جبکہ حکمران طبقہ لوٹی ہوئی ملکی دولت سے پرُ تعیش زندگی گزار رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مفاد پرست سیاستدانوں کی وجہ ملک مسائلستان بن گیا ہے الیکشن میں گلی محلوں میں جا کر ووٹ مانگنے والے سیاستدان انتخابی معرکہ جیتنے کے بعد عوام غریب عوام کو بھول جاتے ہیں لہٰذا ایسے سیاستدانوں سے عوامی فلاح وبہبود کی اُمید رکھنا صرف دیوانے کا خواب ہے ۔انہوں نے کہا کہ کرپٹ اور مفاد پرست سیاستدان ملک وقوم کی تقدیر نہیں بدل سکتے ،پاکستان کی تقدیر تب ہی بدلے گی جب غریب عوام سے کوئی ایماندار شخص پارلیمنٹ میں پہنچ کر قائد اعظم اور علامہ اقبال کے افکار کی روشنی میں قانوں سازی کرکے ملک کو حقیقی معنوں میں فلاحی ریاست بنائے گا۔
معروف اداکارہ کنول نعمان نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ( ن)کو 2013 میں جب حکومت ملی تھی تو دہشت گردی اور لوڈشیڈنگ سمیت دیگر بے پناہ مسائل ورثے میں ملے تھے لیکن نواز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے ملک کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے سخت محنت کی جس کے نتیجے میں دہشت گردی اور لوڈشیڈنگ میں واضح کمی ہوئی ،پاک چین اقتصادی راہداری کی تعمیر شروع ہوئی جبکہ شہباز شریف نے صوبے میں سٹرکوں کا جال بچھانے سمیت دیگر ترقیاتی کام کرائے جو (ن) لیگ کی عوام دوستی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن کے ثبوت نہ ملنے کے باوجود نوازشریف اور مریم نوازکو نیب عدالت نے 109مرتبہ بلایا اور وہ پیش ہوئے ،عدالت نے خود کہا کہ کرپشن کا کوئی ثبوت نہیں ملاہے لیکن اس کے باوجود مفروضے کی بنیاد پر نواز شریف کو 10سال جیل کی سزا سنادی گئی ،عوام تعصب پر مبنی اس فیصلے کو تسلیم کرنے کو تیار نہیں ہیں ،ملک بھر کی غیور عوام پچیس جولائی کے دن شیر کے نشان پر مہر ثبت کرکے اپنا فیصلہ نوازشریف کے حق میں سنائے گی۔
ملک کی معروف گلو کارہ افشاں نے کہا ہے کہ پاکستان کو بنے ستر برس بیت گئے کسی بھی حکومت نے فنکاروں سمیت غریب لوگوں کی فلاح وبہبود کیلئے کچھ نہیں کیا،اب جو بھی حکو مت آئے اُس کو چاہئے کہ وہ عوام کے درینہ مسائل کو حل کرنے کیلئے عملی اقدامات کرے ۔ انہوں نے کہا کہ میری محب وطن پاکستانیوں سے اپیل ہے کہ وہ الیکشن سے پہلے اُمیدواروں کا کڑا احتساب کریں اورآئین کے آرٹیکل 62 اور 63پر پورا اترنے والے اُمید واروں کو ہی ووٹ دیں جبکہ کوشش کریں کہ ماضی میں آزمائے ہوئے سیاستدانوں کو ووٹ دینے کی بجائے نئے چہروں کو ووٹ کے ذریعے پارلیمنٹ میں پہنچائیں تاکہ وہ ملک وقوم کی ترقی وخوشحالی کیلئے کام کریں۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے