Voice of Asia News

سوشل میڈیا کے زیادہ استعمال سے ذہنی دباؤ نوجوانوں کو نفسیاتی مریض

 لاہور(وائس آف ایشیا)سوشل میڈیا کے زیادہ استعمال سے ذہنی دباؤ نوجوانوں کو نفسیاتی مریض بنانے لگا، نیند کی کمی سے نوجوانوں کی ذہنی صلاحیتیں بھی ماند پڑنے لگیں۔رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کی تازہ تحقیق کے مطابق ہر وقت موبائل ، ٹیبلٹ یا کمپیوٹر کی اسکرین پر جمی نظریں اور اس دوران مختلف ایپس کا استعمال نوجوانوں کے ذہنی دباؤ میں اضافے کا سبب بن رہا ہے اور اس کی وجہ سے نوجوان نسل نفسیاتی مسائل کا شکار ہورہی ہے۔ رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کے مطابق سوشل میڈیا کے بڑھتے ہوئے استعمال کے باعث نوجوانوں میں نیند کی کمی بڑھتی جارہی ہے جس سے ان کی ذہنی صلاحیتیں ماند پڑرہی ہیں ۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا کی اہمیت اور اس کے مثبت اثرات سے اجتناب نہیں لیکن کسی بھی چیز کی زیادتی انسان کے دل و دماغ کو متاثر کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے اسی وجہ سے خاص طور پر نوجوان بچے اور بچیوں میں ذہنی انتشار اور بعض معاملات میں احساسی محرومی جیسے عوامل بھی سامنے آتے ہیں۔ رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کی اس تازہ تحقیق میں 14 سے 24 برس کے 1500 سے زائد نوجوانوں کو شامل کیا گیا تھا

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے