Voice of Asia News

تارکین وطن کے معاملے پر ایمنسٹی انٹرنیشنل کی یورپی ملکوں پر کڑی نکتہ چینی

لندن(وائس آف ایشیا) ایمنسٹی انٹرنیشنل کی کی جانب سے کہا گیا ہے کہ غیرقانونی تارکین وطن کے حوالے سے یورپی ملکوں اور خاص طور سے اٹلی اور مالٹا کی پالیسیاں جانی نقصانات میں اضافے کا سبب بن 4142ہے ہیں۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے تارکین وطن سے متعلق اپنی رپورٹ جاری کردی ۔رپورٹ میں کہا گیا کہ یورپی ملکوں کے اقدامات کی وجہ سے بحیرہ روم میں سفر کرنے والے غیرقانونی تارکین وطن کی ہلاکتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔رپورٹ میں یورپی یونین اور لیبیا کے درمیان ہونیوالے سمجھوتے پر بھی کڑی نکتہ چینی کی گئی ہے۔سمندر میں بھٹکنے والے تارکین وطن کے لیے ریسکیو آپریشن کے حوالے سے بھی یورپی ملکوں اور خاص طور سے اٹلی اور مالٹا کے مخاصمانہ رویے کی وجہ سے سینکڑوں تارکین وطن کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہوگئی ہیں۔انسانی حقوق کے عالمی ادارے ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا ہے کہ اس وقت دس ہزار سے زائد تارکین وطن لیبیا میں قائم حراستی مراکز میں موجود ہیں جہاں بنیادی انسانی سہولتیں بھی میسر نہیں ہیں۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے اپنی رپورٹ میں لکھا کہ حکومت اٹلی کی جانب سے این جی اوز کو ریسکیو آپریشن سے روک دیا جانا بھی بحیرہ روم میں جانی نقصانات میں اضافے کا سبب بن رہا ہے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے