Voice of Asia News

جنوبی ضلع پلوامہ کے ترال قصبے میں 11افراد گرفتار ، قصبے میں مکمل ہڑتال

سری نگر(وائس آف ایشیا)مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے نام نہاد یوم آزادی کی تقریبات کی کامیابی کے لیے بھارتی فورسز نے تلاشی مہم تیز کر دی ہے جنوبی ضلع پلوامہ کے ترال علاقے میں فورسز اور پولیس کی جانب سے مسلسل چھاپوں اور گرفتاریوں کے خلاف جموہ کو احتجاجی ہڑتال کی گئی جس کے نتیجے میں علاقے میں معمول کی زندگی ٹھپ ہوکر رہ گئی ہے۔ بھارتی فورسز نے علاقے سے 11افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ گرفتاریوں کے خلاف جمعہ کو ترال قصبے اور اسکے مضافاتی علاقوں میں ہمہ گیر ہڑتال کی وجہ سے معمول کی زندگی ٹھپ ہو کر رہ گئی ہے۔ ادھر بھارتی فوج اور پولیس ٹاسک فورس نے سری نگر کے علاقوں اونتہ بھون صورہ ، مہجور نگر سمیت درجن بھر علاقوں کو محاصرے میں لے کرتلاشی کاروائی عمل میں لائی۔محاصرے کے دوران جہاں فورسز نے مکانوں کی تلاشی لی وہیں دکانداروں کے علاوہ راہ گیروں سے پوچھ تاچھ کرکے ان کے شناختی کارڈ چک کئے گئے۔مقامی لوگوں کے مطابق فورسز نے علاقے میں تمام داخلی اور خارجی راستوں کو سیل کیااورکسی بھی فرد کو اندر یا باہر جانے کی اجازت نہیں دی۔اس دوران چھتہ بل علاقہ کے باغیاث ، مغل محلہ اور چھانہ محلہ میں بھی تلاشی کاروائی عمل میں لائی گئی15اگست کے پیش نظرسول لائنز ،بائی پاس اور سرینگر کے مضافات میں پولیس وفورسز کی گشت بڑھا دی گئی ہے اور سڑکوں پر پولیس وفورسز کی جانب سے نجی گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کو روک کر ان کی باریک بینی سے تلاشی لی جا رہی ہے۔15اگست کی تقریب اس سال پہلی بار شیر کشمیر سٹیڈیم سونہ وار میں منعقد ہونے والی ہے اور سٹیڈیم کے ارد گرد بھی حفاظت کے سخت اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ مختلف علاقوں اور دیہات سے شہر میں داخل ہونے والی چھوٹی بڑی گاڑیوں کو روک کر ان کی تلاشی لی جا رہی ہے جبکہ کئی مقامات پر مسافروں اور راہگیروں کو قطاروں میں کھڑا کر کے ان کے شناختی کارڈ چیک کرنے کے علاوہ ان کی جامہ تلاشی لی جاتی ہے۔ شام کے بعد شہر میں سڑکوں پر پولیس کی طرف سے رکاوٹیں کھڑا کی جارہی ہیں اور گاڑیوں کی چیکنگ کی جارہی ہے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے