Voice of Asia News

مزاحمتی قیادت دفعہ 35 کا دفاع کرنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنائے گی

سری نگر(وائس آف ایشیا) مقبوضہ کشمیر کی مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی گیلانی،میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ سماج کے سبھی طبقوں کو اعتماد میں لیکر لوگوں سے مشاورت کرے گی تاکہ دفعہ 35  کا دفاع کرنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنائی جائے۔ مشترکہ قیادت دفعہ 35  کے بھارتی سپریم کورٹ میں مقدمے کی سماعت 27اگست سے قبل وکلا، تاجروں، ٹرانسپورٹروں، ڈاکٹروں، ہوٹل مالکان اور صنعت کاروں سے اس اہم معاملے میں انکا نکتہ نظر جاننے کی کوشش کرے گی۔جمعرات کی شام میر واعظ اور ملک، حیدر پورہ میں گیلانی کی رہائش گاہ پہنچے جہاں انہوں نے دفعہ 35Aکا دفاع کرنے کے معاملے پر مشارت کی۔کئی گھنٹوں تک مشاورت کرنے کے بعد اس بات کا فیصلہ کیا گیا کہ سماج کے سبھی طبقوں کو اعتماد میں لیا جائیگا جس کے بعد ریاست کی ڈیمو گرافی تبدیل کرنے کی سازش کا مقابلہ کرنے کیلئے لائحہ عمل طے کیا جائیگا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ ریاستی عوام نے تاریخی ہڑتال کر کے عبدیہ دیا ہے کہ وہ قربانی کیلئے تیار ہیں۔مشترکہ قیادت نے پہلے ہی عوامی رابطہ مہم کی شروعات کی ہے اور اس سلسلے کے اگلے مرحلے میں وکلا، ڈاکٹروں، تاجروں،طلبا،ملازمین، ٹرانسپورٹروں کی انجمنوں اور ایسوسی ایشنوں کے صدور سے رابطہ قائم کیا ہے تاکہ کوئی مشترکہ حکمت عملی اپنائی جاسکے۔میر واعظ عمر فاروق نے میڈیا کو بتایا میٹنگ کے دوران چند اہم فیصلے لئے گئے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے