Voice of Asia News

کیلیفورنیا ‘جنگلات میں لگی آگ غیر معمولی شدت‘ایمرجنسی نافذ

واشنگٹن(وائس آف ایشیا) امریکا کی ریاست کیلیفورنیا کے جنگلات میں لگی آگ بدستور بے قابو نظر آتی ہے اور ریاست کے 13 مختلف مقامات پر لگی آگ نے6 لاکھ 71 ہزار ایکڑ پر پھیلے جنگلات کیساتھ 2 ہزار عمارتوں کو تباہ کر دیا ہے۔گزشتہ روز گورنر کیلیفورنیا جیری براؤن نے لاس اینجلس کے قریب دو علاقوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔اگرچہ 13 مقامات پر لگی آگ میں سے 50 فیصد کو امدادی کارکنوں نے بجھانے میں کامیابی حاصل کر لی ہے لیکن اس کے باوجود آگ کی شدت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ دھواں 4 ہزار 828 کلومیٹر دور ریاست نیویارک میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔ امدادی کارکنوں نے سیکڑوں گھروں کو خالی کرا لیا اور مکینوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا ہے۔حکام کے مطابق یہ اگ کیلیفورنیا کے جنوب میں کلیولینڈ نیشنل فاریسٹ میں لگی اور دیکھتے ہی دیکھتے پھیل گئی، آگ نے 18 ہزار ایکڑ پر پھیلے جنگلات کو تباہ کر دیا تھا۔ پولیس نے آتش زنی کے شبے میں ایک خص کو گرفتار کرلیا ہے۔ آگ کی وجہ سے اگرچہ کوئی جانی نقصان نہیں ہوا لیکن مالی نقصانات کا اندازہ ایک ارب ڈالرز سے زائد بتایا گیا ہے۔ کیلیفورنیا کے محکمہ جنگلات کے مطابق آگ لگنے کیوجہ حتمی طور پر نہیں بتائی جا سکتی لیکن بظاہر ایک گاڑی سے مکینیکل فالٹ کیوجہ سے نکلنے والی چنگاریوں سے آگ لگی ہوگی۔ دوسری جانب ملک بھر کی نیشنل ویدر سروس پر دکھایا جا رہا ہے کہ ملک کے ایک کونے میں لگی آگ کا دھواں دوسرے کونے (نیویارک) تک دیکھا جا سکتا ہے۔ ریاست بھر کے فائر فائٹرز پوری کوشش کر رہے ہیں کہ آگ بجھا دی جائے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے