Voice of Asia News

جموں کشمیر کے مکین اپنی سرزمین کو دوسرا فلسطین نہیں بننے دیں گے یاسین ملک

سری نگر(وائس آف ایشیا) جموں وکشمیرلبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کے مکین اپنی سرزمین کو دوسرا فلسطین نہیں بننے دیں گے جہاں قابض اسرائیل نے اصلی باشندوں کو نکال باہر کرکے غلام بنادیا تھا۔اسٹیٹ سبجیکٹ قانون ہماری امتیازی شناخت اور حق خودارادیت کی ضمانت فراہم کرتا ہے اسلئے اس قانون کا تحفظ کرنا جموں کشمیر کے ہر باسی کا فریضہ ہے۔ہمارے اسیروں کو ظالموں کے برعکس سیاسی موقف رکھنے کی پاداش میں بھارتی جیلوں اور جموں کشمیر کی جیلوں میں بدترین اذیتیں دی جارہی ہیں جو دراصل جمہوریت کشی کے مترادف ہے۔ ان باتوں کا اظہار لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے مدینہ چوک لال چوک میں منعقدہ ایک احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس میں زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔مشترکہ مزاحمتی قیادت کے اعلان کردہ پروگرام پر عمل پیرا ہوتے ہوئے لبریشن فرنٹ کے قائدین و اراکین مدینہ چوک لال چوک پر جمع ہوئے جہاں لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کی سربراہی میں انہوں نے جموں کشمیر میں نافذ اسٹیٹ سبجکٹ قانون پر حملوں اور جیلوں میں اسیر کشمیریوں کی حالت زار کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ احتجاجی مظاہرے میں فرنٹ قائدین، طلباء ، جوان اور بزرگوں اور تاجروں کی ایک بڑی تعداد کے ساتھ ساتھ زندگی کے کئی دوسرے شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی بڑی تعداد نے والہانہ شرکت کی۔ فرنٹ چیئرمین نے موروثی اسٹیٹ سبجیکٹ قانون کی مجوزہ منسوخی اور اسکے دفاع کو کشمیریوں کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ کشمیری اپنی سرزمین کی خصوصیت اور امتیازی حیثیت کے دفاع کیلئے اپنا لہو بہانے سے بھی گریز نہیں کریں گے۔ یاسین صاحب نے کہا کہ اسٹیٹ سبجکٹ قانون اور اس کا تحفظ کشمیریوں کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے اور اس قانون کی منسوخی یا اس میں کسی بھی قسم کی ترمیم کوئی بھی جموں کشمیر باسی ٹھنڈے پیٹوں برداشت نہیں کرسکتا۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے تینوں خطوں سے تعلق رکھنے والے لوگ اس قانون کی منسوخی یا اس میں کسی بھی قسم کے ردو بدل کے خلاف یک آواز ہیں کیونکہ اس کی منسوخی یا اس میں کسی قسم کی ترمیم ہم سبھوں کی زندگیوں پر اثر انداز ہوجائے گی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے