Voice of Asia News

نوجوت سنگھ سدھو دورہ پاکستان بھارتی انتہا پسندوں نے ان کا پاسپورٹ منسوخ کرنے کا مطالبہ

نئی دہلی (وائس آف ایشیا) بھارت کے سابق کرکٹر اور بھارتی پنجاب کے کانگریسی وزیر نوجوت سنگھ سدھو کا دورہ پاکستان ان کے لیے وبال جان بن گیا ہے۔ بھارتی انتہا پسندوں نے ان کا پاسپورٹ منسوخ کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے ۔ ۔ نوجوت سنگھ سدھو جمعہ کو بھارت سے لاہور پہنچے تھے اور ہفتے کو انہوں نے ایوان صدر اسلام آباد میں وزیر اعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں شرکت کی ۔ تقریب میں ان کی نشست آزاد کشمیر کے صدر سردارمسعود خان کے ساتھ تھی ۔ حلف کے بعد عمران خان سدھو سے ملے اسی دوران سدھو پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملے۔ پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے گلے ملنے پر بھارتی میڈیا سیخ پا پ ہو گیا ہے ۔ بھارتی ٹی وی کا کہنا ہے کہ پاکستان کے فوجی سربراہ جنرل باجوہ کا شمار ایسے فوجی افسران میں ہوتا ہے جو اکثر وبیشتر کشمیر پر بات کرتے ہیں ، کشمیر کو لے کر اشتعال انگیز رویہ ظاہر کرتے رہتے ہیں۔ افسوس ہے نوجوت سنگھ سدھو یہ سب بھول گئے۔اتنا ہی نہیں، حلف برداری کی تقریب کے دوران نوجوت سنگھ سدھو آزاد کشمیر کے صدر مسعود خان کی بغل والی سیٹ پر بیٹھے نظر آئے۔جیسے ہی یہ ویڈیو سامنے آئی بھارت میں انتہا پسندوں نے شور مچانا شروع کر دیا بھار تی ٹی وی کے مطابق ٹوئیٹر پر کئی لوگ ان کا پاسپورٹ منسوخ کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں جبکہ کچھ لوگ انہیں غدار وطن کہہ رہے ہیں۔ادھر سدھو کا پاکستان جانا کانگریس کو بھی اچھا نہیں لگ رہا ہے۔ کانگریس ترجمان راشد علوی نے کہا کہ اگر وہ مجھ سے مشورہ لیتے تو میں ان کو پاکستان جانے سے منع کرتا۔ وہ دوستی کے ناطے گئے ہیں لیکن دوستی دشمنی سے بڑی نہیں ہے۔ سرحد پر ہمارے جوان مارے جا رہے ہیں اور ایسے میں پاکستان فوج کے سربراہ کو سدھو کو گلے لگانا غلط پیغام دیتا ہے۔ حکومت ہند کو انہیں پاکستان جانے کی اجازت نہیں دینا چاہئے تھی۔ بھارتی اخبا ر کے مطابق نوجوت سنگھ سدھو پاکستانی وزیر اعطم عمران خان کے لیے کشمیری شال کا تحفہ لے کر گئے تھے یہ تحفہ انہوں نے عمران خان کو دے دیا

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے