Voice of Asia News

تعلیمی اداروں کے100میٹرز کی حدود میں میٹھے ٹھنڈے مشروبات پر پابندی

اسلام آباد( وائس آف ایشیا)وزارت صحت(این ایچ ایس) نے تعلیمی اداروں کے100 میٹرز کے اندر میٹھے مشروبات پر پابندی کی تجویز دی ہے جس میں تعلیمی اداروں سمیت دکانوں،کنٹینر اور ٹک شاپوں کو فروخت بھی شامل ہے۔میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ دل کی بیماری سٹروک،سرطان،ذیابیطس اور پھیپھڑوں کی بیماریاں پاکستان میں تقریباً68فیصد اموات کا حصہ ہیں،اس کی وجہ میٹھے مشروبات ہیں،یہ آراء وفاقی وزیر صحت عامر محمود کیانی نے خیبرپختونخوا،بلوچستان اور گلگت بلتستان کے وزیر تعلیم اور وفاقی وزیر تعلیم کو ایک خط میں پہنچائی ہیں۔واضح رہے کہ2017ء میں پنجاب حکومت نے صوبے بھر کی تمام تعلیمی اداروں کی کینٹینز میں کولڈ ڈرنکس کی فروخت پر پابندی لگائی تھی اور تعلیمی اداروں کی100میٹرز کی حدود میں ایسے مشروبات فروخت نہیں ہوسکتے تھے اور خلاف ورزی کرنے والی کینٹینوں کے خلاف لائسنس منسوخ کرنے کی ہدایت کی گئی تھی۔سندھ حکومت نے بھی حال ہی میں تمام سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں اور کالجز میں تمام ٹھنڈے مشروبات رنگدار کھانے کی چیزوں پر پابندی لگائی ہے۔اپنے خط میں وزیر صحت کیانی نے یہ بھی کہا ہے کہ پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کیلئے پاکستان پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے
 

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے