Voice of Asia News

ماؤں کی کم نیند بچوں کی نشوونما کو متاثر کرتی ہے، تحقیق

لاہور (وائس آف ایشیا خصوصی رپورٹ میمونہ عزیز) برطانیہ کے طبی ماہرین نے متنبہ کیا ہے کہ ماؤں کی کم یا کچی نیند بچوں پر اثرانداز ہوتی ہے جس کی وجہ سے اُن کی نشو ونما بری طریقے سے متاثر ہوتی ہے تفصیلات کے مطابق برطانوی ماہرین نے حالیہ تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ جو مائیں بے خوابی کا شکار ہوتی ہیں اُن کے بچوں کی نشوونما اور دماغی صحت بری طریقے سے متاثر ہوتی ہے۔ تحقیق کے دوران ماہرین نے کم نیند کی بیماری میں مبتلا ماؤں اور اُن کے بچوں کی صحت کا جائزہ لیا جس میں یہ بات سامنے آئی کہ بچوں کے سونے کا معاملہ خاندانی نظام کے تحت چلتا ہے۔ ماہرین نے نیند کے دوران الیکٹرو اینسیفیلو گرافی (ای ای جی) کے ذریعے بچوں کی نیند کا جائزہ لینےکے لیے اُن کے دماغوں میں الیکٹرو راڈ نصب کیے جس کے بعد مطالعاتی رپورٹ مرتب کی گئی۔ تحقیقاتی ماہرین نے والدین سے بھی اُن کی اور بچوں میں پیدا ہونے والے نیند کے مسائل کے حوالے سے سوالات کیے، جس سے یہ نتیجہ اخذ کیا گیا کہ جن بچوں کی مائیں بے خوابی یا کچی نیند کا شکار تھیں اُن کے بچے بھی گہری نیند لینے سے قاصر تھے۔ حیران کُن طور پر تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ باپ کی نیند کا تعلق کسی صورت بھی بچے کو اثر انداز نہیں کرتا البتہ وہ بچے جو ماؤں کے پاس زیادہ وقت گزارتے ہیں اُن میں واضح اثرات دیکھے گئے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •