Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کے حوالے سے بدترین علاقہ ہے ،سید صلاح الدین

مظفرآباد(وائس آف ایشیا) متحدہ جہاد کونسل چیئرمین و امیر حزب المجاہدین سید صلاح الدین نے کہا ہے کہ بھارت کا جنگی جنون، روایتی ہٹ دھرمی مسئلہ جموں کشمیر کے حل میں رکاوٹ ہے اورکوئی سیاسی یا مذاکراتی حل ناممکن بلکہ مسئلہ کا حل ریاست گیر مسلح جدوجہد سے ہی ممکن ہے۔سید صلاح الدین کا حزب المجاہدین کے زیر اہتمام عزم جہاد و شہادت ریلی سے خطاب کررہے تھے۔ریلی کا انعقاد چہلہ چوک تا نیلم قلعہ تک کیا گیا ۔ شرکا ریلی نے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر شہدائے کشمیر کی تصاویر، آزادی کے حق اور بھارت مخالف جملے درج تھے۔ صلاح الدین نے کہا کہ 70 سالہ طرز عمل سے واضح ہے کہ بھارت کو کشمیریوں سے کوئی دلچسپی نہیں بلکہ کشمیر کی سرزمین اور ریاستی وسائل سے دلچسپی ہے۔ فوجی قبضہ کو برقرار رکھنے کیلئے ہر قسم کے مظالم اور تباہ کاریاں جاری رکھے ہوئے ہے۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کی حالیہ رپورٹ میں جموں کشمیر کو انسانی حقوق کی پامالی کے حوالہ سے دنیا کا بدترین علاقہ قرار دیا ہے انہوں نے کہا کہ اب اقوام متحدہ کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ ایک کمیشن مقبوضہ ریاست میں بھیجے جو وہاں کے عوام کی حالت زار اور رائے کا جائزہ لے۔ ریاستی عوام عالمی طاقتوں کی مجرمانہ خاموشی اور بیس کیمپ کی کمزور اور نیم جان پالیسیوں کے باوجود 70 سالہ مثالی جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارت کا 8 لاکھ مسلح افواج کے سہارے علاقے میں انتخابات رچانا دراصل عالمی برادری کو دھوکہ دینے کی ایک ناکام کوشش ہے، حالیہ انتخابات میں تمام منفی حربوں کے باوجود 3فیصد ووٹنگ عالمی برادری اور بھارت کیلئے چشم کشا ہے بلکہ بھارت کیخلاف کشمیری عوام کی جانب سے ایک کامیاب ریفرنڈم قرار دیا ہے۔کشمیری عوام نہ صرف اپنے گھربلکہ کشمیری طلبا، ملازمین مزدور اورتاجر بھارت کے ہر علاقے اور تعلیمی اداروں میں حکومت ہند کے ہاتھوں زیر عتاب ہیں۔ریاست میں جاری تحریک آزادی کشمیر میں مردو زن، خورد وکلاں، مزدور اور ملازم اور اعلی تعلیم یافتہ پی ایچ ڈی سکالر جیسے ڈاکٹر محمد رفیق بٹ اور ڈاکٹر عبدالمان وانی اس جدوجہد میں اپنا لہو اور سب کچھ قربان کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت او ر فوج ایک منصوبے کے تحت ریاست میں نوجوانوں کو چن چن کر شہید کررہی ہے، گھروں اور بازاروں کو نذر آتش کیا جارہا ہے، بے گناہ جوانوں،بزرگوں اور بچوں کو گرفتار کر کے اذیت خانوں اور بھارتی جیلوں میں شدید تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ اس کے باوجودجموں کشمیر کے عوام میں جذبہ حریت اور ایثار و قربانی تحریک کی کامیابی کی واضح علامت اور بھاتی سامراج کیلئے وجہ پریشانی ہے۔پاکستان کے ارباب اختیار سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ کشمیر کی گھمبیر اور قیامت خیز صورتحال کا سنجیدگی سے جائزہ لے کر بھارت کیخلاف مثر اور نتیجہ خیز اقدامات اٹھائے۔ محض روایتی زبانی جمع خرچ سے معاملات مزید بگڑ جائیں گے۔انہوں نے پولیس اور ٹاسک فورس سے اپیل کی کہ انہیں زیب نہیں دیتا کہ وہ بھارتی فورسز کے ساتھ مل کر اپنے ہی کشمیری بھائیوں کازدوکوب کرے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے