Voice of Asia News

آصف زرداری نے نواز شریف سے بات کرنے کا اشارہ دے دیا

اسلام آباد(وائس آف ایشیا)سابق صدر آصف علی زرداری نے سابق وزیراعظم نواز شریف سے بات کرنے کا اشارہ دے دیا۔تفصیلات کے مطابق اتوار کے روز مقامی ہوٹل میں پیپلز لائرز فورم کے کنونشن سے خطاب کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ جب پرویز مشرف نے اقتدار سنبھالا اس وقت میں بحران کا شکار تھا اور ہم جیلوں میں گئے 9/11 ہوا اور ملک میں باہر سے پیسہ آیا جس سے ملک کے معاشی حالات ٹھیک ہوئے اور مشرف دور ختم ہونے پر بھی ملک معاشی بہران کا شکار ہوگیا اور ہماری حکومت آئی تو ہم نے گندم کی قیمت بڑھائی جس سے گندم کی پیداوار میں اضافہ ہوا اور ہم نے ملک کو بحرانی صورتحال سے نکالنے کی ہر ممکن کوشش کی انہوں نے کہا کہ میری نظر میں ہمارا ملک زرعی ملک ہے او رہمیں اپنی زراعت پر توجہ دینی چاہیے نہ کہ فصلوں پر توجہ دی جائے انہوں نے کہا کہ کوئی مانے یا نہ مانے کہ ہماری آبادی 30 کروڑ کے لگ بھگ ہے اور اس میں اضافہ ہورہا ہے ہمیں اپنے مستقبل کی ضروریات پوری کرنے کیلئے حکمت عملی بنانا ہوگی ہم اپنے دورمیں ایسی حکمت عملی بنائی لیکن ہمارے بعد آنے والی حکومت نے ہماری پالیسیوں کو ختم کردیا۔انہوں نے کہ اکہ وزیراعظم گھر سے دولہار کی طرح تیار ہوکر آتے ہیں اور انصاف کا تقاضا یہ ہے کہ ان کے گھر بنی گالہ کو قانونی حیثیت دے دی جاتی ہے اور عام غریب لوگوں کے گھروں کو مسمار کردیا جاتا ہے۔ آصف علی زرداری نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ کوئی ایک غم ہو تو میں بتاؤں انٹرنیٹ پر جاکر دیکھ لیں۔ جو مقدمات میں بھگت رہا ہوں وہ میاں صاحب کے بنائے ہوئے ہیں اس کا ہر گز مطلب یہ نہیں کہ ہم اکٹھے نہیں بیٹھ سکتے۔انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت کی نااہلی جلد ہی سامنے آگئی ہے،تمام سیاسی جماعتوں کو ملکر قرارداد لانی ہوگی کہ موجودہ حکومت ملک نہیں چلا سکتی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے