Voice of Asia News

امریکہ کا آئی این ایف معاہدہ منسوخ کرنا ہوش مندی نہیں، روس

ماسکو(وائس آف ایشیا)روس اور امریکا ایک بار پھر آمنے سامنے آگئے۔ پیوٹن نے ٹرمپ کو سرد جنگ کے دوران ہوئے آئی این ایف معاہدہ کو منسوخ کرنے پر تنبیہ کردی۔ امریکی صدر کا کہنا ہے کہ روس نے معاہدے کا پاس نہیں رکھا ہم معاہدہ کو منسوخ کررہے ہیں۔سابق صدر میخائل گورباچوف نے امریکی صدر کے اس فیصلے کی مذمت کی ہے۔ یہ معاہدہ 1987میں گوربا چوف اور رونالڈ ریگن کے درمیان ہوا تھا۔ گورباچوف نے ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلہ پر کہا کہ یہ بدترین فیصلہ ہے۔ روسی نائب وزیر خارجہ سرگئی ربکوف نے کہا کہ امریکا یہ اقدام بہت خطرناک ہوگا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکا انیس سو ستائیس میں ہوئے انٹرمیڈیٹ رینج نیوکلئیر فورس معاہدہ کی صریح خلاف ورزی کررہا ہے۔ امریکی صدر نے روس پر معاہدہ کی خلاف ورزی کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ روس جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کررہا ہے اس لئے ہم اس معاہدے کو منسوخ کررہے ہیں۔رواں مہینے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے روس کے ساتھ ایٹمی ہتھیاروں کا معاہدہ ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ روس کئی برس سے معاہدے پر عمل نہیں کررہا اس لئے معاہدہ ختم کررہے ہیں۔ ڈونلڈٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ ہم روس کو ایٹمی معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کرنے دیں گے۔انہوں نے سابق امریکی صدر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ معلوم نہیں کہ صدر اوباما نے معاہدہ ختم کیوں نہیں کیا۔دوسری جانب روس نے امریکا کی جانب سے ایٹمی معاہدہ ختم کرنے کے اعلان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ دنیا میں واحد عالمی سپر پاور بننے کا خواب دیکھ رہا ہے۔ روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف کا کہنا ہے کہ امریکا کا واحد عالمی طاقت بننے کا خواب کبھی پورا نہیں ہوگا۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے