Voice of Asia News

سانحہ بجبہاڑہ جمہوریت کے دعویداروں کیلئے بدنما داغ

سرینگر(وائس آف ایشیا )کل جماعتی حریت کانفرنس(گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے سانحہ بجبہاڑہ میں جاں بحق ہوئے افراد کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کی بلندی درجات اور مغفرت کے لیے دعا کی ہے۔ اپنے ایک بیان میں گیلانی نے کہا کہ 22اکتوبر1993 کو بجبہاڑہ میں فورسز اہلکاروں نے نہتے شہریوں کا قتل عام کرکے خون کی ندیاں بہادیں۔ حریت رہنما نے کہا کہ آج جب حضرت بل سانحہ کے خلاف احتجاج کرنے کی پاداش میں جاں بحق کئے گئے افراد کو ہم سے جدا ہوئے 25سال ہوئے ہیں، مگر وہ زخم جو اس وقت مظلوم دیا گیا تھا، آج اتنا طویل عرصہ گزرنے کے بعد بھی ایک رستا ہوا ناسور بن کر مندمل ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ انہوں نے کولگام میں برپا کی گئی قیامت صغری پر گہری تشویش اور غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ معصوم اور عام لوگوں کو گاجر مولی کی طرح اپنے عزیز واقارب کی آنکھوں کے سامنے کاٹا جارہا ہے لیکن سنگدل اور جابر حکمرانوں کے پتھر دل اس کی معمولی سی ٹیس بھی محسوس نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ انسانی زندگیوں سے یہ سفاکانہ کھلواڑ پچھلے 71برسوں سے جاری ہے اور اس کی تمام تر ذمہ داری بھارتی حکام اور ان کے مقامی گماشتوں پر عائد ہوتی ہے۔حریت چیئرمین نے آئے روز بھارتی حکمرانوں کی طرف سے غرور اور تکبر کے نشے میں یہاں کے عوامی جذبات کو بزور طاقت دبانے کے اشتعال انگیز بیانات جلتی پر تیل کا کام کرتے ہیں۔ فوجیوں کو کشمیر کے خون کا پہلے سے ہی چسکا لگا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جوانوں کی بے مثال قربانیاں ہم سب کے لیے لمحہ فکریہ ہے کہ انسانی لہو کے ان سوداگروں سے ہمیں کسی قسم کا میل ملاپ نہیں رکھنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ خوشحال اور ترقی کے فریب کارانہ نعروں سے یہ لوگ ہماری سادہ لوح قوم کو دھوکہ دیتے ہیں اور ہماری قوم ان کے اس فریب میں آکر ان ہی قاتلوں کی دستار بندی کرنے میں پیش پیش رہتے ہیں۔ لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک نے بجبہاڑہ قتل عام بھارتی جمہوریت کے چہرے پر ایک بد نماداغ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیری قوم اپنے پیدائشی حق کی جد جہد میں مصروف ہیں ۔ اس دوران لبریشن فرنٹ کا ایک وفدنے بجبہاڑہ جاکر مزار شہدا پر ایک مجلس میں شرکت کی ۔وفد میں صدر ضلع اسلام آباد، محمد اسحاق گنائی، مشتاق احمد کوچھے، شوکت احمد گتو،شبیر احمد راتھر اور دوسرے کارکن شامل تھے ۔اس موقع پر لبریشن فرنٹ قائدین نے کہا ہے کہ 1947 سے آج تک پانچ لاکھ سے زائد کشمیریوں کا لہو بہایا گیا ہے اور لہو کی اس ارازانی میں جہاں فسطائی قوتوں کا ہاتھ رہا ہے وہیں فوجی تسلط نے بھی اس میں بھر پور کردار ادا کیا ہے۔ لبریشن فرنٹ ( آر ) کے سرپرست اعلی بیرسٹر عبدالمجید ترمبو، ایڈوکیٹ ایوب راٹھور اور جنرل سیکریٹری وجاہت بشیر قریشی نے اپنے مشترکہ بیان میں شہدائے بجبہاڑہ کویاد کرتے ہوئے کہا کہ درگاہ حضرتبل محاصرے کے دوران ان پر امن مظاہرین پر راست فائرنگ کرکے موت کی نیند سلادیا گیا تھا اور آج تک ان کے قاتلوں سے نہ صرف صرفِ نظر کیا گیا بلکہ انہیں مراعات سے نوازا بھی گیا۔ اسلامک پولیٹکل پارٹی کے چیئرمین محمد یوسف نقاش نے مہلوکین کے درجات کی بلندی کے لئے دعا کرتے ہوئے ان کے لواحقین کے صبر و استقامت کے مظاہرے کی تعریف کی ۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے