Voice of Asia News

فضا میں زہریلی آلودگی کے باعث عوام میں مختلف بیماریاں بڑھنے لگیں

لاہور( وائس آف ایشیا)محکمہ ماحولیات کے ترجمان نسیم الرحمن نے کہاہے کہ لاہور کی فضا میں زہریلی آلودگی کی شرح 100 سے 110 ماےئکرومیٹر ہے اس لئے فضلوں کے باقیات جلانے پر دفعہ 144 نافذکر دی ہے ٹریفک پولیس نے زہریلی دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں پر کڑی نظر رکھی ہوئی ہے اور انڈسٹری مالکان سے بھی بات چیت جاری ہے۔تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز لاہور کی فضاء میں زہریلی گیس کی وجہ لوگوں کی آنکھیں جلنے لگیں اور دل کے مریض سمیت دمے کے مریضوں کو بھی سانس لینے میں دشواری کا سامنارہا اور لوگ چھوٹی بڑی بیماریوں مین مبتلا ہو رہے ہیں اس حوالے سے محکمہ موسمیات کے ترجمان نسیم الرحمن نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہاہے لاہور کی فضا میں زہریلی آلودگی کی شرح 100 سے 110 مائکرومیٹر ہے اس لئے فضلوں کے باقیات جلانے پر دفعہ 144 پنجاب میں نافظ کر دی گئی ہے ٹریفک پولیس نے زہریلی دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں پر کڑی نظر رکھی ہوئی ہے اور انڈسٹری مالکان سے بھی بات چیت جاری ہے تاکہ فضاء کو آلودگی سے بچایا جا سکے

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے