Voice of Asia News

میں کیسے مانوں کہ عمران خان عاشق رسول نہیں ؟مدینے میں بغیر جوتوں کے اُترے،شہلا رضا

لاہور ( وائس آف ایشیا)پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شہلا رضا وزیراعظم عمران خان کے دفاع میں سامنے آ گئیں۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کی جانب سے آسیہ بی بی کو بری کیے جانے کا فیصلہ سامنے آتے ہی ملک بھر میں مذہبی تنظیموں کی جانب سے مظاہرے شروع ہو گئے تھے۔ جس میں جگہ جگہ راستے بلاک کر کے جلاو گھیراو کیا گیا۔اس ساری صورتحال میں سرکاری و نجی املاک کو نقصان پہنچایا گیا اور شہریوں کی گاڑیاں تک جلا دی گئیں۔اس موقع ملک کو اربوں روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑا۔نہ صرف یہ بلکہ کچھ بینرز کی تصاویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں جس میں وزیر اعظم عمران خان اور چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار سے متعلق فتوے بھی دئیے گئے تھے۔تاہم اب پیپلز پارٹی کی رہنما شہلا رضا بھی عمران خان اور چیف جسٹس کے دفاع میں آ گئی ہیں۔انہوں نے عمران خان کی نماز پڑھنے کی مثالیں دی اور اسی متعلق گفتگو کرتے ہوئے سابق اسیپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا کا کہنا تھا کہ اس تمام معاملے میں جو دل آزرائیاں ہوئیں بچوں میں خوف پھیلایا گیا۔اس کی صرف معافی کافی نہیں ہو گی اور ان فتوں کو باطل قرار دینا چاہئیے۔میں کیسے مان لوں یہ سب؟ میں نے اپنے وزیراعظم کو جلسوں میں نماز پڑھتے دیکھا ہے اور میں نے انہیں مدینہ میں بغیر جوتوں میں چلتے دیکھاہے۔جو لوگ کہتے ہیں کہ یہ یہودی کا بچہ ہے وہ غلط کہتے ہیں۔ہمیں سوچنا چاہئیے کہ ہمیں کاروائی کہاں ڈالنی ہے۔ایک ایسا چیف جسٹس جو اپنے کام سے ہٹ کر بھی بہت کام کر رہا ہے۔چیف جسٹس کو عوام کو اتنا درد ہے کہ وہ کبھی پانی کا مسئلہ حل کر رہا ہے تو کبھی کوئی مسئلہ حل کر رہا ہے۔میں کیسے مان لوں کہ ایسا شخص عاشقِ رسول نہیں ہو سکتا؟

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے