Voice of Asia News

بھارت: ہسپتال ملازمین نے دیگر افراد کے ساتھ مل کر آئی سی یو میں خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

نئی دہلی (وائس آف ایشیا)بھارتی ریاست اتر پردیش کے ضلع بریلی میں جواں سالہ لڑکی کو ہسپتال کے ملازم اور چار دیگر افراد نے انتہائی نگہداشت یونٹ (آئی سی یو) میں زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ متاثرہ لڑکی کو پانچ روز قبل خاندانی فارم میں کام کے دوران سانپ نے ڈس لیا تھا، جس پر اسے علاج کے لیے ہسپتال کے ‘آئی سی یو’ میں داخل کیا گیا تھا۔لڑکی کو جس وقت زیادتی کا نشانہ بنایا گیا وہ آئی سی یو میں تنہا تھیں۔سینئر پولیس افسر اے سنگھ نے بتایا کہ ‘متاثرہ لڑکی نے یہ واقعہ ہسپتال کے جنرل وارڈ میں منتقل ہونے کے بعد بیان کیا۔’ان کا کہنا تھا کہ واقعے کا مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے، ہسپتال کے ملازم کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ دیگر چار ملزمان کی تلاش جاری ہے۔متاثرہ لڑکی نے واقعہ بیان کرتے ہوئے کہا کہ ہسپتال کا ملازم اور چار دیگر افراد رات کو اس وقت آئی سی یو میں داخل ہوئے جب وہ تنہا تھیں، ملزمان نے پہلے لڑکی کو انجیکشن لگانے کی کوشش کی اور جب اس نے مزاحمت کی تو ملزمان نے منہ اور ہاتھ باندھنے کے بعد ان کا ‘ریپ’ کیا۔واضح رہے کہ دو ہفتے قبل اتر پردیش کے ضلع باگ پَت کے ہسپتال میں زیر علاج نرسنگ کی طالبہ کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنانے پر وارڈ بوائے اور میڈیکل کے طالب علم کو گرفتار کیا تھا۔ 

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے