Voice of Asia News

جنوبی کوریا کی خواتین کو ملازمتوں کے حصول میں صنفی امتیاز کا سامنا ہے

سیئول وائس آف ایشیا) جنوبی کوریا کی خواتین کو ملازمتوں کے حصول میں صنفی امتیاز کا سامنا ہے۔یہ بات فرانسیسی خبر رساں ادارے کی طرف سے جاری رپورٹ میں بتائی گئی ۔ رپورٹ کے مطابق مختلف اداروں کے سربراہان ملازمت کے امیدواروں سے انٹرویو کے دوران جان بوجھ کر خواتین امیدواروں کو مسترد کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ سیئول کی سیوکیانگ یونیورسٹی سے گریجویشن کرنے والی 25 سالہ کیسی لی کے مطابق وہ گذشتہ ایک سال سے ملازمت کی تلاش میں ہے اور اسے ابھی تک ناکامی کا منہ ہی دیکھنا پڑ رہا ہے۔

ایک انٹرویو کے دوران اس سے پوچھا گیا کہ اس نے ابھی تک شادی کیوں نہیں کی اور اس کا کب تک شادی کرنے کا ارادہ ہے۔ کیسی لی کے مطابق انٹرویو کرنے والے افسران نے اپنے ریمارکس میں یہ بھی کہا کہ کسی خاتون کا 25 سال کی عمر تکشادی نہ کرنا اس کی غیر ذمہ داری کا مظہر ہے، مزید یہ کہ بچوں کی پیدائش پر اکثر خواتین ملازمت کو خیر باد کہ دیتے ہیں۔کیسی لی نے کہا کہ مرد امیدواروں سے ایسے ذاتی سوالات نہیں پوچھے گئے۔واضح رہے کہ جنوبی کوریا میں کم از کم چار بنکوں کے 18 ایگزیکٹو افسران کے خلاف ملازمت کی خواہشمند خواتین امیدوارون کو جان بوجھ کر مسترد کرنے کے الزامات پر تحقیقات جاری ہیں۔
image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے