Voice of Asia News

نام نہاد انتخابات حق خود ارادیت کا ہرگز نعم البدل نہیں، میرواعظ

سرینگر ( وائس آف ایشیا )مقبوضہ کشمیر میں حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ محمد عمر فاروق نے کہا ہے کہ کشمیری حریت قیادت اور عوام نے ہر طرح کے نام نہاد انتخابات کو کلی طور پر مسترد کردیا ہے کیونکہ یہ انتخابات حق خود ارادیت کا ہرگز نعم البدل نہیں البتہ بھارت ان انتخابات کو اپنے مذموم مقاصد کے لیے استعمال کرتا ہے ۔کشمیر میڈیاسروس کے مطابق میر واعظ عمر فاروق نے سرینگر میں ایک عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کشمیری پنچایتی انتخابات کا بھی اسی طرح مکمل بائیکاٹ کریں گے جس طرح انہوں نے میونسپل انتخابات کا کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جہاں سارے حقوق طاقت کے بل پر سلب کرلئے گئے ہوں، جہاں فوج کو بے پناہ اختیارات کے تحت کسی بھی شہر ی کے گھر میں گھس کر کسی بھی فرد کو نشانہ بنانے کی کھلی چھوٹ ہو ،جہاں رہائشی مکانات بموں اور بارود سے کھنڈرات میں تبدیل کئے جاتے ہوں ،جہاں اپنے حق کے مطالبہ کی پاداش میں برسوں معصوم لوگوں کو جیلوں میں سڑایا جاتا ہو ، جہاں کالے قوانین کے تحت نوجوانوں کو برسوں پابند سلاسل رکھا جارہا ہوہاں جمہوریت کی بات کرنا جمہوریت کی توہین کے مترادف ہے ۔میرواعظ نے کہا کہ مہذب دنیا میں انتخابات کو ایک جمہوری عمل تصور کیا جاتا ہے اور کوئی بھی باہوش انسان اسکی مخالفت نہیں کرسکتا تاہم جموں وکشمیر میں جب تک حقیقی جمہوریت کو بحال نہ کیا جائے اور کشمیریوں کے جذبات اور احساسات اور بے پناہ قربانیوں کو مد نظر رکھ کر حق خودارادیت کی بنیاد پر مسئلہ کشمیرکو حل کرنے کیلئے اقدامات نہ اٹھائے جائیں تب تک نہ تو کشمیریوں کے سیاسی مستقبل کا تعین ہو سکے گا اور نہ ہی موجودہ غیر یقینی حالات میں تبدیلی آسکے گی۔میرواعظ نے کہا کہ کشمیریوں کا ایک ہی مطالبہ ہے اور وہ حق خود ارادیت ہے۔دریں اثنا میرواعظ عمر فاروق سرینگر کے علاقے حیدر پورہ میں سید علی گیلانی کی رہائش گا ہ پر گئے اور ان سے انکے داماد غلا م حسن مخدومی کی وفات پر تعزیت کی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے