Voice of Asia News

اعظم سواتی وزارت سے مستعفی،وزیر اعظم نے استعفیٰ منظور کر لیا

عدالت میں کیس کے باعث اپنی اخلاقی ذمہ داری پوری کرتے ہوئے استعفیٰ دیا،اعظم سواتی کی تصدیق

اسلام آباد(وائس آف ایشیا ) وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اعظم سواتی نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے جسے وزیر اعظم عمران خان نے منظور کر لیا ہے ۔انھوں نے یہ استعفیٰ جمعرات کو وفاقی کابینہ کے اجلاس کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان کو پیش کیا۔ملاقات کے دوران انہوں نے وزیر اعظم سے موجودہ حالات میں کام کرنے سے معذوری ظاہر کی اور کہا وہ اخلاقی طور پر سمجھتے ہیں کہ انہیں اپنے عہدے سے استعفی دے دینا چاہیے۔وزیر اعظم نے ان سے کہا کہ ان کے خلاف سپریم کورٹ میں جو کیس چل رہا ہے اس کا فیصلہ آنے تک وہ اپنا فیصلہ موخر کر دیں۔تاہم اعظم سواتی نے کہا کہ وہ اپنے ضمیر پر بوجھ محسوس کر رہے ہیں اور ان حالات میں اپنی ذمہ داری بخوبی انجام نہیں دے پائیں گے۔وزیر اعظم نے انہیں ہدایت کی کہ وہ اپنے خلاف کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کی تمام ہدایات کی پابندی کریں۔بعد میں ذرائع ابلاغ سے گفتگو میں اعظم سواتی نے کہا کہ میں نے عدالت میں کیس کے باعث اپنی اخلاقی ذمہ داری پوری کرتے ہوئے استعفیٰ دیا ہے ۔وزیر اعظم نے استعفیٰ منظور کر لیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میں اب اپنا کیس کسی عہدے یا اختیار کے بغیر لڑ سکوں گا۔دوسری جانب ترجمان وزیرا عظم کے مطابق اعظم سواتی نے اپنے خلاف جاری کیس میں فیصلہ آنے تک وزارت رکھنے سے معذرت کی۔واضح رہے کہ اعظم سواتی کے خلاف سپریم کورٹ آف پاکستان میں آئی جی تبادلہ کیس زیر سماعت ہے۔سپریم کورٹ نے گزشتہ روز آئی جی اسلام آباد تبادلہ ازخود نوٹس کیس میں ان کے خلاف آرٹیکل 62 ون ایف کے تحت کارروائی کرنے کیلئے کہا تھا۔چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے اپنے ریمارکس میں کہا تھا کہ کیوں نہ اعظم سواتی کو ملک کے لیے ایک مثال بنائیں،کیا حاکم بھینسوں کی وجہ سے عورتوں کو جیل میں بھیجتے ہیں؟۔چیف جسٹس نے کہا تھا کہ اعظم سواتی کو اخلاقی ذمہ داری پوری کرنی چاہیے تھی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے