Voice of Asia News

صحت خرابی کا بہانہ این آر او لینے کی کوشش ہے، شیخ رشید کا دعویٰ

لاہور(وائس آف ایشیا)وزیرریلوے شیخ رشید نے ایک بار پھر دعویٰ کیا ہے صحت خرابی کا بہانہ این آر او لینے کی کوشش ہے، وزیراعظم اپنا کوئی رکن ڈراپ کرکے مجھے پی اے سی کمیٹی میں شامل کریں ، میں ( ن) لیگ کا احتساب کروں گا،چیئرمین پی اے سی کی تعیناتی کا معاملہ سپریم کورٹ میں ضرور لے جاؤں گا ،2019 پاکستان کی ترقی کا سال ہے، اپوزیشن جو کہہ رہی ہے وہ کہتی رہے گی، بھٹو اور شریف خاندان کا کوئی مستقبل نہیں، مجھے ڈر ہے کہیں بلاول ان کی زد میں نہ آ جائے۔ ریلوے ہیڈکوارٹرز لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ ان کیلئے بھی کسی نے احتجاج کیا ہے،اللہ ان کوصحت دے، جب یہ بیمار ہوں اور چیخیں تواس کا مطلب ہے یہ این آراوکے قریب ہیں۔ تین باروزیراعظم کیلئے کبھی کوئی بندہ باہر نہیں آیا تاہم آج جولوگ نکلیں ہیں ان کومبارکباد پیش کرتا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ میں آج بھی اپنی بات پرقائم ہوں ،2019 پاکستان کی ترقی کا سال ہے۔عمران خان ملک کومسائل سے نکالے گا۔پاکستان دنیا کی عالمی سیاست کا سال ہے۔انہوں نے کہا کہ شہبازشریف کے معاملے پر میں سوموارکوعمران خان کوخط لکھوں گاکہ مجھے بھی پی اے سی میں شامل کیا جائے،پی ٹی آئی اپنے کسی بندے کو ڈراپ کرکے مجھے شامل کرے، کیونکہ میں ایک پارٹی کی نمائندگی کرتا ہوں۔میں پھر ن لیگ کا احتساب کریں ۔شیخ رشید نے کہا کہ میں شہبازشریف کیخلاف سپریم کورٹ جارہاہوں اگر سپریم کورٹ میری بات نہیں مانے گی تومیں لڑائی تونہیں کرسکتا۔انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ میں نے کبھی نوازشریف اور شہبازشریف کا نام صاحب کے بغیر نہیں لیا۔میں نے کبھی بیٹیوں کا نام نہیں لیا۔لیکن شہبازشریف کو شرم آنی چاہیے کہ اس پر 121کیسز ہیں وہ کیا احتساب کرے گا۔انہوں نے کہا کہ دوہفتوں میں ریلوے کو10کروڑ کی آمدن ہوئی ہے۔ریلوے کے پھرکرائے بڑھانے جارہا ہوں۔جس نے 1350روپے والے کرائے میں سفر کرنا وہ کرے، جس نے 1700اورجس نے 7000روپے جانا ہے وہ ان میں سفر کرے۔ انہوں نے کہا کہ نئی ٹرینوں کے افتتاح کیلئے وزیراعظم عمران خان سے درخواست کی ہے۔ روہڑی ریلوے اسٹیشن پرشاپنگ مال سمیت 100 سے زائد دکانیں قائم کی جا رہی ہیں۔ تمام ریلوے اسٹیشنز پر 15 دن بعد پولیس کو بھی ٹکٹ چیک کرنے کا اختیار ہوگا۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے