Voice of Asia News

یوم یکجہتی پر حریت قیادت اور جہادی تنظیموں کا پاکستانی حکومت اور عوام سے اظہار تشکر،خصوصی پیغامات جاری

سرینگر( وائس آف ایشیا ) مقبوضہ کشمیر میں حریت قیادت اور جہادی تنظیموں نے یوم یکجہتی کشمیر منانے پر پاکستانی حکومت اور عوام کا شکریہ ادا کیا ہے ۔کل جماعتی حریت کانفرنس (گ) کے چیئرمین سید علی گیلانی نے 5فروری کو یومِ یکجہتی کشمیر منانے کے لیے پاکستانی حکومت، فوج، عوام اور خاص کر بیرونی دنیا میں ان افراد کا دل کی عمیق گہرائیوں سے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری عوام پچھلے 71سال سے اپنے حقِ خودارادیت کے لیے برسرِ جدوجہد ہیں اور اس جدوجہد میں پاکستان روزِ اول سے ان کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی سطح پر مدد کرتا آرہا ہے۔ حریت چیرمین نے کہا کہ کشمیری قوم اپنی آزادی کے لیے دنیا کی ایک بڑی ملٹری طاقت کے ساتھ نبرد آزما ہے اور اس جدوجہد میں پاکستان دنیا کا وہ واحد ملک ہے، جو ان کے حقِ خودارادیت کو خود بھی تسلیم کرتا ہے اور عالمی برادری کے سامنے اس کی وکالت بھی کرتا ہے جس کے لیے ہم ان کے مشکور ہیں۔ میری دلی خواہش ہے کہ پاکستان دنیا بھر میں قائم اپنے سفارت خانوں اور سفارتی چینلوں کو اور زیادہ فعال بنائے اور انہیں کشمیریوں کی جدوجہد اور جموں کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کو اجاگر کرانے کے لیے متحرک کرے۔ انہوں نے جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کے خلاف اقوام عالم سے بالعموم اور اقوامِ متحدہ سے بالخصوص دردمندانہ اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ان عالمی اداروں کو اپنی اعتباریت اور افادیت پر کوئی بھی سمجھوتہ نہیں کرنا چاہیے اور مظلوم وکمزور قوموں کے جائز مطالبات اور مفادات کا تحفظ فراہم کرنے کو یقینی بنایا جانا چاہیے۔ حریت راہنما نے مسئلہ کشمیر کو ایک دیرینہ انسانی مسئلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس مسئلے کا حل نہ صرف ضروری ہے بلکہ ناگزیر بھی، کیونکہ اس مسئلے کی وجہ سے جموں کشمیر کے ڈیڑھ کروڑ عوام کی زندگیاں شدید خطرات سے دوچار ہیں۔ حریت کانفرنس (ع) کے چیرمین میرواعظ عمرفاروق نے فروری کو یوم یکجہتی کشمیر منانے کے موقعہ پر حکومت پاکستان ،و ہاں کے عوام اور جملہ سیاسی قیادت کی کشمیریوں کی حق و انصاف پر مبنی جدوجہد کے تئیں سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت اور اس مسئلے کو کشمیری عوام کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق حل کرنے کی کوششوں کو ہر لحاظ سے کشمیری عوام کیلئے حوصلہ افزا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل کے حوالے سے پاکستان کی حکومت اور وہاں کی سیاسی قیادت گزشتہ سات دہائیوں سے مشکل حالات کے باوجود کوششیں بروئے کار لارہی ہے اس کیلئے جموں وکشمیر کے عوام ان کے ممنون اور مشکور ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام ایک طویل عرصہ سے اپنے جائز حق کے جدوجہد میں بے پناہ مصائب اور آلام جھیلتے آرہے ہیں اور پاکستان نے ہر کٹھن اور مشکل مرحلے پر کشمیری عوام کو جس طرح انکی جدوجہد کے تئیں تعاون اور حمایت جاری رکھی اس نے یہاں کے مظلوم عوام کو اپنی جدوجہد کو آگے بڑھانے میں زبردست حوصلہ مندی کا جذبہ عطا کیا۔حریت چیرمین نے کہا کہ اگرچہ پاکستان مسئلہ کشمیر کا ایک اہم فریق ہے تاہم پاکستان نے ہمیشہ اپنی فریقانہ حیثیت کے ساتھ ساتھ ایک بے لوث سیاسی حمایتی کی حیثیت سے کشمیری عوام کی تحریک آزادی کو علاقائی اور عالمی سطح پر ہر ممکن تعاون فراہم کرنے یا کرانے میں اہم رول ادا کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا اقوام متحدہ کی قراردادوں یا سہ فریقی مذاکرات کے ذریعے منصفانہ حل ہی اس خطے کے محفوظ مستقبل کا ضامن بن سکتا ہے۔ حریت چیرمین نے کہا کہ پوری کشمیری قوم اور کل جماعتی حریت کانفرنس حکومت پاکستان اور پاکستانی عوام کی بے لوث حمایت کیلئے انکے شکر گزار ہیں اور پوری کشمیری قوم سیاسی اور اقتصادی طور ایک مستحکم اور مضبوط پاکستان کیلئے دعا گو ہے۔تحریک حریت چیرمین محمد اشرف صحرائی نے پاکستان کی طرف سے دنیا بھر میں 5فروری کو یومِ یکجہتی کشمیر کے طور پر منانے پر پاکستانی حکومت، اپوزشن پارٹیوں اور عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر ایک متنازعہ خطہ ہے اور پاکستان اس متنازعہ مسئلے کا ایک اہم فریق ہے۔ صحرائی نے کہا کہ جموں کشمیر کی سرزمین پریہاں کے عوام ظلم وجبر، مار دھاڑ اور بربریت کے شکار ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہم ان تمام ممالک اور افراد کا شکریہ ادا کرتے ہیں اور آج جموں کشمیر کے متنازعہ مسئلے کے حل کے لیے 5فروری کو جہاں جہاں بھی اور جو بھی ممالک یومِ یکجہتی کشمیر کے طور پر مناتے ہیں ہم ان تمام ممالک اور افراد چاہے وہ مسلمان ہوں یا غیر مسلم دل کی عمیق گہرائیوں سے ان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ان ممالک سے اپیل کرتے ہیں کہ جموں کشمیر کے عوام کے ساتھ یکجہتی کا دن منانا صرف 5فروری تک ہی محدود نہیں رہنا چاہیے، بلکہ سال بھر جموں کشمیر کے عوام کو انصاف پسند ممالک کی حمایت جاری رہنی چاہیے۔لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمدیاسین ملک کی اہلیہ مشعل ملک نے پاکستانی عوام کا کشمیری عوام سے بے پناہ حمایت کیلئے شکریہ ادا کیاہے ۔انہوں نے کہا ہے کہ اس سے ہمارے حوصلے بلند ہوں گے اور ہمیں ظالم کے خلاف خلاف لڑنے میں ہمت ملے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ کی قرارداد کے تحت ہمارا قانونی حق ہمیں فراہم کیا جائے جیسے دنیا کے ہر انسان کو عزت، وقار اور آزادی کا حق حاصل ہے۔ادھر تحریک مزاحمت،پیپلز لیگ ،مسلم لیگ،تحریک کشمیر،لبریشن فرنٹ(ر)، سالویشن مومنٹ،ڈیموکریٹک پولٹیکل مومنٹ،مسلم کانفرنس ،محاذآزادی ،انٹرنیشنل فورم فار جسٹس ،تحریک استقلال ، تحریک استقامت اورینگ مینزلیگ نے 5فروری کویوم یکجہتی کشمیرمنانے پر پاکستان کی حکومت اور عوام کا شکریہ ادا کیا ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ پاکستان کشمیریوں کی سیاسی ، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔مزاحمتی جماعتوں کے مطابق جموں کشمیر کے حق خود ارادیت کی بحالی کے تعلق سے پاکستان کی قربانیاں اور کوششیں ناقابل فراموش ہیں۔تحریک مزاحمت کے چیئرمین بلال احمد صدیقی نے پاکستانی حکومت اور عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی قربانیاں اور کوششیں ناقابل فراموش ہیں۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے اہم فریق کی حیثیت سے پاکستان نے روز اول سے ہی اس مسئلہ کو کشمیری عوام کی سیاسی خواہشات کو مد نظر رکھتے ہوئے اقوام متحدہ کی منظور شدہ قراردادوں کے مطابق حل کرنے کی خاطر کشمیری عوام کی جدوجہد کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت میں کوئی کمی روا نہیں رکھی بلکہ اس کے نتیجہ میں بھارتی اعتراضات اور اختلافات کے باوجود اپنے موقف پر قائم رہا ۔پیپلز لیگ کے علیل چیئرمین غلام محمد خان سوپوری نے یوم یکجہتی کشمیر منانے پر پاکستان کی حکومت اور عوام کا شکریہ ادا کیا ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ پاکستان کشمیریوں کی سیاسی ، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔ لیگ کے علیل چیئرمین غلام محمد خان سوپوری نے کہا ہے کہ پاکستان 1990سے حق خودارادیت کے حصول کیلئے کشمیریوں کی جاری جدوجہد کو اجاگر کرنے کیلئے یہ دن منارہا ہے۔خان سوپوری نے یو م یکجہتی کشمیر منانے اور کشمیریوں کے حق خودارادیت کے حصول کی جدوجہد کی مکمل اور غیر مشروط حمایت کرنے پر کشمیری عوام کی طرف سے پاکستان کے عوام ، حکومت اور جملہ قیادت کا شکریہ ادا کیا۔مسلم لیگ نے پاکستانی حکومت، فوج، دینی جماعتوں اور عوام کا شکریہ ادا کیا ہے اور پاکستانی قوم کا کشمیر کے تئیں ایثار و قربانی کو سراہتے ہوئے سلام پیش کیا ہے۔ بیان کے مطابق لیگ کے سیکریٹری جنرل محمد رفیق گنائی نے کہا ہے کہ پاکستان کو غیر مستحکم کرنے اور اس کی بنیادوں کو ہلانے کی بیرونی سازشوں کے ساتھ ساتھ عالم کفر کا پاکستان پر وقتی دباو،مالی امداد پر بندش لگانے کی دھمکی اور اسے تنہا کرنے کے ہتھکنڈوں کے باوجود پاکستان نے پچھلے ستر سالوں سے جس طرح عالمی فورموں پر جموں کشمیر کے عوام کی حق خودارادیت کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی سطح پر مدد اور وکالت کی اور کشمیریوں کے دردو کرب کو دنیا میں اجاگر کیا وہ نہایت ہی قابل فخر کارنامہ ہے۔تحریک کشمیر نے حکومت پاکستان، عوام اور سیاسی و مذہبی جماعتوں خصوصا یورپ و امریکہ میں مقیم کشمیریوں اور تنازعہ کشمیر کے حل کے سلسلے میں انفرادی واجتماعی کوششیں کرنے والی تنظیموں و افراد کا یوم کشمیر منانے کیلئے شکریہ ادا کیا۔ اپنے ایک بیان میں تحریک کشمیر کے صدر محمد موسی نے تحریک کشمیر یورپ سے وابستہ تمام ذمہ داروں اور کارکنوں کے جذبوں کا بھی تہہ دل سے شکریہ ادا کیا۔لبریشن فرنٹ ( آر ) کے سرپرست اعلی بیرسٹر عبدالمجید ترمبو ،ایڈوکیٹ ایوب راٹھور اور جنرل سیکریٹری وجاہت بشیر قریشی نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی حکومت ،فوج اور عوام جموں کشمیر کے عوام اور جدوجہد آزادی کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور یوم کشمیر مناکر ایک احسن اقدام کررہے ہیں۔ انہوں نے پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہمیں امید ہے کہ پاکستانی عوام اور حکومتی ادارے عوام کو ان کی جدوجہد آزادی میں سیاسی ،اخلاقی اور سفارتی سطح پر اپنی حمایت جاری رکھیں گے ۔سالویشن مومنٹ کے چیئرمین ظفر اکبر بٹ ،ڈیموکریٹک پولٹیکل مومنٹ چیئرمین فردوس احمد شاہ، مسلم کانفرنس کے چیئر مین شبیر احمد ڈار ،محاذآزادی کے صدر میر محمد اقبال،انٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے چیئرمین محمداحسن انتو،ینگ مینزلیگ چیئرمین امتیاز احمد ریشی،تحریک استقلال کے چیئرمین غلام نبی وسیم اور تحریک استقامت چیئرمین غلام نبی وار نے کہا ہے کہ پاکستان کے لوگ جس آن بان اور شان سے 5 فروری کو اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طوریوم یکجہتی کشمیر مناتے ہیں وہ اس بات کا بین ثبوت ہے کہ اہل کشمیر حق خود ارادیت کی جس جدوجہد میں مصروف ہیں اس میں وہ اکیلے نہیں بلکہ اہل پاکستان شانہ بہ شانہ انکے ساتھ کھڑے ہیں۔دریں اثناء متحدہ جہاد کونسل کے چیئرمین اور حزب سربراہ سید صلاح الدین نے پاکستان، پاکستان زیر انتظام کشمیر کی قیادت اور پاکستانی عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ہے کہ وقت آگیا ہے کہ پاکستان سفارتی، اخلاقی اور میڈیا مہم جوئی کے ساتھ ساتھ کشمیریوں کی ٹھوس مدد کرے۔جہاد کونسل ترجمان سید صداقت حسین کی جانب سے موصولہ بیان کے مطابق صلاح الدین متحدہ جہاد کونسل کے ایک اعلی سطحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔صلاح الدین نے کہا کہ پاکستانی حکومت اور پاکستانی عوام جس بھر پور طریقے اور جوش و خروش کے ساتھ یکجہتی کے عظیم الشان مظا ہرے کا اظہار کررہا ہے وہ مثالی ہے اور اس طرح سے کشمیری عوام کے حوصلوں کو ایک نئی جلا مل رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام اور ان کی مسلمہ قیادت اس کیلئے پاکستانی عوام اور حکومت کا شکریہ ادا کرتی ہے تاہم اس حقیقت کو بھی سمجھنے کی ضرورت ہے کہ بھارت جس طرح عالمی قوانین کی دھجیاں اڑا کر کشمیری عوام کی نسل کشی کررہا ہے ،پیلٹ کے ذریعے معصوم بچوں ،بچیوں اور بزرگوں کی بینائی چھین رہا ہے۔انسانی حقوق کی پامالیوں کا مرتکب ہورہا ہے۔ان حالات میں صرف سفارتی اور سیاسی تعاون کا فی نہیں بلکہ ٹھوس مدد اور تعاون کی ضرورت ہے۔صلاح الدین نے کہاکہ ایک بنیادی فریق کی حیثیت سے پاکستان کو اب وہ کردار ادا کرنا چا ہئے۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی عوام نے آزادی کے حصول کے لئے جان و مال اور آبرو کی بے مثال قربانیاں پیش کی ہیں اور یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے۔پاکستان سمیت عالمی برادری کو اس معاملے کی طرف بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ صلاح الدین نے کہا کہ ریاستی عوام 8 لاکھ فورسز کے ساتھ ہر گلی کوچے میں نبرد آزما ہے اور حصول آزادی تک اس جدوجہد کو جاری رکھنے کا عزم کئے ہوئے ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی اس ہٹ دھرمی کو توڑنے کیلئے ،پاکستان کو روایتی طریقہ کار سے ہٹ کر ایک جاندار اور نتیجہ خیز پالیسی پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ادھر لشکر طیبہ جموں کشمیر کے چیف محمودشاہ نے یوم یکجہتی کشمیر منانے پر پوری پاکستانی عوام کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہاہے کہ بے شک پاکستانی عوام ایک عظیم قوم ہے۔ترجمان لشکر طیبہ ڈاکٹرعبداللہ غزنوی کی جانب سے موصولہ بیان میں کہا گیا ہے کہ کشمیراور پاکستان کے عوام کا اٹوٹ رشتہ ہے اور یہ رشتہ کلمہ طیبہ کی بنیا د پر ہے ۔بیان کے مطابق محمود شاہ نے کہا کہ ہندوستان اب ظلم کے ذریعے تحریک آزادی کشمیر کو ختم نہیں کرسکتا۔انہوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ مضبوط موقف کے ساتھ مسئلہ کشمیر کو عالمی برادری کے سامنے پیش کریں۔ تحریک المجاہدین کے امیر شیخ جمیل الرحمان نے کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے پر حکومت پاکستان، پاکستانی عوام اور دنیا بھر میں موجود پاکستانیوں کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ اب نعروں ، زبانی دعوؤں اور بیان بازی کے بجائے عملی طور پر قربانیاں پیش کرنے والوں کا ساتھ دیا جائے ۔موصولہ بیان کے مطابق وقت کا تقاضا ہے کہ کشمیریوں کے ساتھ سال میں کسی ایک دن کے بجائے ہر لمحہ عملی یکجہتی کا ثبوت دیا جائے کیونکہ کشمیر میں ہر روز یوم کشمیر ہے اور ہر روز کشمیریوں کا قتل عام ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومتِ عمران خان کشمیر میں شفاف اور غیر جانبدارانہ رائے شماری کرانے کے لئے اقوام متحدہ کو متحرک کرے تا کہ دنیا بھارت پر دباؤ ڈالنے پر مجبور ہو جائے کہ وہ 71سال قبل کشمیریوں اور دنیا کے ساتھ کئے گئے وعدوں کے مطابق مزید وقت ضائع کئے بغیر رائے شماری کرائے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے