Breaking News
Voice of Asia News

نوجوان لڑکی نے 25 سالہ لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

ممبئی ( وائس آف ایشیا)بھارت میں ایک 19 سالہ لڑکی کو دوسری لڑکی کا ریپ کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔بھارتی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ سیماپوری پولیس نے ایک 19سالہ لڑکی کو حراست میں لیا ہے جس پر یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ اس نے ایک 25 سالہ لڑکی کا سیکس ٹوئے سے ریپ کیا ہے۔پولیس نے اس کیس میں 4 لوگوں کو حراست میں لیا ہے جب کہ ملزمہ سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔یہ کیس ستمبر 2018ء میں سامنے آیا تھا تاہم پولیس نے یہ کہتے ہوئے کیس کی پیروی کرنے سے انکار کیا تھا کہ سیکشن 377 کے تحت ایک خاتون کسی دوسری خاتون کا ریپ نہیں کر سکتی۔رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ متاثرہ خاتون کام تلاش کرنے کی غرض سے دہلی آئی تھی تاہم یہاں پر اسے ایک خاتون کی جانب سے ہی زیادتی کا نشانہ بن گئی۔پولیس کے مطابق متاثرہ لڑکی کو اپارٹمنٹ میں لے کر جانے کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔واضح رہے بھارت میں اس سے قبل بھی کئی ایسے واقعات پیش آئے ہیں۔اس سے قبل ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ بھارت کے شہر ہریانہ کے ایک گاؤں کے رہائشی شخص نے بتایا کہ میں نے شراب کے نشے میں دھُت ہو کر بکری کو ہراساں کرتے آٹھ افراد کو دیکھا تو شور مچا دیا۔ جس کے آٹھ گھنٹے بعد وہ دوبارہ آئے ، میری بکری کو اُٹھا کر لے گئے اور اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔کچھ وقت کے بعد بکری کے مالک کو پاس موجود ایک گھر سے اپنی بکری کے کراہنے کی آواز سنائی دی۔ آٹھ ملزمان میں سے پانچ موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ دوسری جانب پولیس نے انڈین پینل کوڈ کے سیکشن 377 کے تحت ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ اس واقعہ کی خبر سامنے آنے پر سوشل میڈیا پر کئی تبصرے شروع ہو گئے۔ اس خبر کو کئی ہزار مرتبہ شئیر بھی کیا جا چکا ہے اور سوشل میڈیا صارفین نے ہوس کے مارے لوگوں کی ذہنیت پر تشویش کا اظہار کیا ہے ۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •