Voice of Asia News

بھارت بندوق اور بارود سے مسئلہ کشمیر حل کرنے کا خواہشمند ہے

سرینگر( وائس آف ایشیا ) کل جماعتی حریت کانفرنس (گ) کے چیئرمین سید علی گیلانی نے لتر پلوامہ کے معرکے میں جان بحق ہوئے نوجوان کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی ضد اور ہٹ دھرمی کی وجہ سے جموں کشمیر میں انسانی خون کی ارزانی رکنے کا نام نہیں لے رہی ہے۔ جموں کشمیر میں جو بھی خون خرابہ ہورہا ہے اس کی تمام تر ذمہ داری بھارت کے حکمرانوں پر عائد ہوتی ہے جو مسئلہ کشمیر کو اس کے جمہوری اور تاریخی پسِ منظر کی روشنی میں حل کرنے کے بجائے صرف اور صرف بندوق اور بارود سے حل کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے جنوبی کشمیرمیں 9نوجوانوں کو گرفتار ی کی بھی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ تلاشی کارروائیوں کے نام پر عام لوگوں کے خلاف شدید بغض اور اشتعالی کارروائیوں کو روا رکھنا انسانی حقوق کی بدترین پامالیوں کا عکاس ہے۔ حریت چیرمین نے کہا کہ بھارت کے غیر حقیقت پسندانہ رویہ کی وجہ سے جموں کشمیر میں قیمتی انسانی زندگیوں کا اتلاف برابر جاری ہے اور قبضے کے خلاف ہمارے نوجوان آئے دن سرفروشی کا راستہ اختیار کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے حریت پسند عوام کا واحد قصور یہ ہے کہ انہوں نے بھارت کے قبضے کو کبھی قبول نہیں کیا ہے اور نہ ہی وہ آئندہ ایسا کرنا اپنے حاشیہ خیال میں بھی لاسکتے ہیں، البتہ تعجب اس بات پر ہے کہ بھارت زمینی حقائق کو تسلیم کرنے سے بڑی ڈھٹائی کے ساتھ انکار کررہا ہے اور ہماری حقِ خودارادیت کی تحریک کو دبانے کے لیے اپنی اندھی طاقت کا بے تحاشا استعمال کرتا ہے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے