Voice of Asia News

نوازشریف کی تضحیک کی جارہی ہے ہمیں رحم کی بھیک نہیں چاہیے، مریم نواز

لاہور( وائس آف ایشیا ) مسلم لیگ (ن) کی رہنما مریم نواز کا کہنا ہے کہ نوازشریف کی تضحیک کی جارہی ہے اور ہمیں رحم کی بھیک نہیں چاہیے۔لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ(ن) متحد ہے جب کہ نواز شریف کی تضحیک کی جارہی ہے اور ہمیں رحم کی بھیک نہیں چاہیے، اس شخص کی صحت سے کھلواڑ کیا جارہا ہے جو 3 بار وزیر اعظم رہ چکا ہے۔ 4 دن سے نوازشریف کو سروسز اسپتال میں رکھاہے جہاں کارڈیک یونٹ نہیں ہے، میڈیکل بورڈ 5 روز کیا کرتا رہا ہے، میاں صاحب کو جیل سے لیکر یہ خود آئے تھے۔مریم نواز کا کہنا تھا کہ بورڈ بنا کر میاں صاحب کی صحت کے معاملے پر تضحیک کی گئی، نواز شریف نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ وہ اس مذاق کا حصہ بننے کو تیار نہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی صحت کے معاملے پر ابہام حکومتی کارندوں نے پیدا کیا، چاروں بورڈز نے کہا کہ نواز شریف کو دل کے اسپتال جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے میڈیکل بورڈ حکومت نے خود بنائے، میڈیکل بورڈ میں ہماری طرف سے کوئی شامل نہیں تھا۔اس سے قبل پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے ڈاکٹرز کی ٹیم نے سروسز ہسپتال کا دورہ کیا جہاں اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر عروج نے سابق وزیراعظم کا طبی معائنہ کیا۔ڈاکٹر نے ادویات کا جائزہ لیا اور ہدایات دیں، پی آئی سی جانے سے انکار کے بعد نواز شریف کو سروسز ہسپتال میں کارڈیک چیک اپ کی سہولت دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔خیال رہے کہ 2 روز قبل سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت کا معائنہ کرنے کے لیے تشکیل دیا جانے والے سروسز ہسپتال کے میڈیکل بورڈ نے انہیں قلب کی تکلیف میں مبتلا ہونے کے باعث امراضِ قلب کے طبی مرکز منتقل کرنے کی تجویز دی تھی۔دوسری جانب مریم نواز کی والد کی عیادت کے لیے سروسز ہسپتال آمد کے موقع پر جب ان سے نواز شریف کے لندن میں علاج کے بارے میں پوچھا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ میاں صاحب واپس جیل جانا چاہیں گے۔خیال رہے کہ 2 فروری کو وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کی جانب سے میڈیکل بورڈ کی سفارش پر سابق وزیراعظم نواز شریف کو فوری ہسپتال منتقل کرنے کی منظوری دینے کے بعد نواز شریف کو ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت کا جائزہ لینے کے لیے بنائے گئے خصوصی میڈیکل بورڈ نے انہیں صحت کے سنگین مسائل لاحق ہونے کا انکشاف کیا تھا جبکہ انہیں فوری طور پر ہسپتال منتقل کرنے کی تجویز دی تھی۔اس سے قبل جناح ہسپتال کے میڈیکل بورڈ نے بھی نواز شریف کو مکمل صحت یاب نہ قرار دے کر ہسپتال منتقل کرنے کی سفارش کی تھی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے