Pakistan cricket captain Sarfraz Ahmed leaves the field after being dismissed during the one day international (ODI) Asia Cup cricket match between Pakistan and India at the Dubai International Cricket Stadium in Dubai on September 19, 2018. (Photo by Ishara S. KODIKARA / AFP) (Photo credit should read ISHARA S. KODIKARA/AFP/Getty Images)
Voice of Asia News

سرفراز احمد کی معطلی نے بورڈ کو چوکنا کر دیا، اینٹی ریسزم کوڈ منظور

لاہور( وائس آف ایشیا) دورہ جنوبی افریقہ میں سرفراز احمد کی معطلی نے پی سی بی کو چوکنا کر دیا اور نسلی تعصب کے واقعات کی روک تھام کیلیے گورننگ بورڈ اجلاس میں اینٹی ریسزم کوڈ کی منظوری دے دی گئی۔جنوبی افریقہ میں ون ڈے سیریز میں پیش آنے والے واقعے میں سرفراز احمد کو 4میچز کیلیے معطل کر دیا گیا تھا، اب پی سی بی نے نسلی تعصب کے واقعات کی روک تھام کیلیے اہم قدم اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔گزشتہ روز ہونے والے گورننگ بورڈ کے اجلاس میں اینٹی ریسزم کوڈ کی منظوری دیدی گئی، رواں ماہ شروع ہونے والی پی ایس ایل 4 میں اس کا عملی نفاذ بھی ہوجائے گا، منظور کیا جانے والا اینٹی ریسزم کوڈ آئی سی سی کوڈ کے مطابق ہے، اس میں تھوڑی بہت ترامیم کی گئی ہیں، پلیئرز ایجوکیشن پروگرام کا دائرہ کار بڑھانے کی تجویز بھی پیش کردی گئی تاکہ کرکٹرز پاکستان کا مثبت تاثر اْبھارنے میں کردار ادا کرنے کے قابل ہوں۔دوسری جانب ڈومیسٹک اسٹرکچر میں مجوزہ تبدیلیوں کے حوالے سے کوئی واضح پیش رفت سامنے نہیں آسکی، اس حوالے سے کام کرنے والی ٹاسک فورس نے نئے مجوزہ اسٹرکچر پر تفصیلات سے آگاہ کیا، گورننگ بورڈ کے اراکین نے روایتی انداز میں اطمینان کا اظہار کردیا۔ان کا کہنا تھا کہ نیا ڈھانچہ مسابقتی اور کرکٹ کے معیار کو بہتر بنانے میں معاون ثابت ہو گا، اس زبانی جمع خرچ کے بعد طے پایا کہ ڈومیسٹک کرکٹ کے حوالے سے قواعد و ضوابط اور طریقہ کار کو حتمی شکل دینے کے بعد گورننگ بورڈ کے سامنے پیش اور منظوری ملنے پر نافذ کردیا جائے گا۔چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے کہا کہ ٹاسک فورس کی کوشش قابل ستائش ہیں، توجہ مقدار کے بجائے معیار بڑھانے پر دی گئی ہے، ڈپارٹمنٹس کا کردار واضح کرنے کے ساتھ ریجنز کی افادیت اور صلاحیت بڑھانے کی کوشش ہوئی ہے،امید ہے کہ ٹاسک فورس بہت جلد بہترین ماڈل منظوری کیلیے گورننگ بورڈ کے سامنے پیش کرنے میں کامیاب ہوجائے گی۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے