Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر میں آج شہید محمد افضل گورو کے یوم شہادت کے موقع پر مکمل ہڑتال کی جائیگی

سرینگر(وائس آف ایشیا )مقبوضہ کشمیر میں آج( ہفتہ کو) شہید محمد افضل گورو کے یوم شہادت کے موقع پر مکمل ہڑتال کی جائیگی ۔ ہڑتال کی اپیل حریت قائدین نے کی تھی ۔ اس موقع پر تمام کاروباری مراکز ، دفاتر اور تعلیم ادارے بند رئیں گے ۔ جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کا نظام بھی مفلوج رہے گا ۔ حریت قائدین سید علی گیلانی ،میر واعظ عمر فاروق اور یسین ملک نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ شہیدقائد تحریک آزادیِ جموں کشمیر محمد مقبول بٹ اور شہید فرزند کشمیر محمد افضل گورو کی جدوجہد اور شہادت تاریخ کشمیر کا تابناک باب ہے۔ بھارت نے ان دونوں کشمیریوں کو نہ صرف یہ کہ تختہ دار پر لٹکاکر شہید کیا بلکہ ان کی اجسد خاکی اور باقیات کو بھی آج تک اپنی قید میں رکھا ہوا ہے۔ان عظیم الشان شہداء کی اور شجاعت و قربانی ملت کشمیر کیلئے ہمیشہ مشعل راہ رہے گی۔ کشمیری اپنے ان شہداء کی قربانیوں اور جدوجہد کو کسی بھی صورت میں فراموش نہیں کرسکتے۔ دریں اثنا کل ‘ بروز سومواریوم مقبول(رح) پر بھی مکمل اور ہمہ گیر احتجاجی ہڑتال ہوگی جبکہ اِسی دن دونوں مصلوبین کی اجساد خاکی اورباقیات کی واپسی کے حوالے سے سرینگر کے مرکز لال چوک میں ایک پرامن احتجاجی مظاہرہ بھی کیا جائے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ دونوں شہداء کی باقیات کی وطن واپسی اور شایان شان طریقے پر ان کی تجہیز و تکفین کے لئے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے نام ایک یادداشت بھی روانہ کی جائے گی۔ مشترکہ قائدین نے شہید قائد تحریک آزادی جموں کشمیر محمد مقبول(رح) بٹ کی جدوجہد، قربانی،شہادت و شجاعت کو تاریخ ساز قرار دیتے ہوئے کہا کہ انکی پامردی اس قوم کیلئے ہمیشہ مشعل راہ رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ مقبول بٹ (رح) شہید نے اْس وقت اپنی جدوجہد کا آغاز کیا جب ہر سو اندھیرا چھایا ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ شہید بابائے قوم کی ذات و صفات کشمیریوں کیلئے مشعل راہ تھی اور رہے گی اور کشمیری اپنے بے لوث قائد کی تقلید کرتے ہوئے جدوجہد آزادی کو ہر حال میں جاری رکھیں گے۔شہید محمد افضل گورو کی قربانی کو یاد کرتے ہوئے مشترکہ قائدین نے کہا کہ اس مجاہد صفت معصوم کشمیری نے ہنستے مسکراتے تختہ دار کو چوم لیا لیکن باطل و ظالم کے سامنے سرنگوں نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ جس طرح سے شہیدقائد محمد مقبول(رح) بٹ اور شہید فرزند کشمیر محمد افضل گورو کو تہاڑ جیل کے اندر تختہ دار پر لٹکادیا گیا اور انکی اجساد خاکی تک کو ورثاء کے حوالے کرنے سے انکار کیا گیا وہ بھارت کے ظالمانہ اور جابرانہ رویے کی واضح اور روشن دلیل ہے۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے