Voice of Asia News

سجاد لون کی جنوبی کشمیر میں سیاسی کارکنوں کو نشانہ بنانے کی مذمت

سرینگر(وائس آف ایشیا)پیپلز کانفرنس کے چیئرمین سجاد غنی لون نے جنوبی کشمیر میں دو الگ الگ واقعات میں سیاسی کارکنوں کو نشانہ بنائے جانے کی سخت مذمت کرتے ہوئے انتظامیہ پرزوردیا کہ ان حملوں کے مرتکب آزاد گھومنے نہ پائیں۔یہاں پیپلزکانفرنس میں شامل ہونے والے نئے افراد کے استقبالیہ پروگرام میں سجاد غنی لون نے سیاسی کارکنوں پر حالیہ حملوں پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک بار پھر سیاسی کارکنوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔بجبہاڑہ میں این سی کارکن کو نشانہ بنایاجانا نہ صرف مجرمانہ حرکت ہے بلکہ ذاتی جائزہ کابھی متقاضی ہے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین دہائیوں میں سیاسی کارکنوں کو قتل کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوا،مگر یتیموں اوربیواؤں کی تعداد میں ضرور اضافہ ہواہے۔اہم سیاسی کارکن جاویدجنید کی قیادت میں چدوراکے100سے زیادہ سیاسی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے سجاد لون نے کہا کہ سیاسی کارکنوں کی بڑھتی ہوئی تعداد پیپلزکانفرنس میں شامل ہورہی ہے جو عوام میں پیپلزکانفرنس کی مقبولیت کاواضح اشارہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز کانفرنس ہی وہ واحد سیاسی متبادل ہے جو ریاست کے لوگوں کو گمراہی، جھوٹ اور دھوکہ دہی کے چنگل سے آزاد کرا سکتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم آنے والے پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات میں تبدیلی لانے کے لئے عوام کی طاقت کو صحیح سمت دکھانے کا عزم رکھتے ہیں۔کارکنوں نے پارٹی کے مشن کی حمایت کا وعدہ کیا، نیز انہوں نے پارٹی کو زمینی سطح پر مضبوط بنانے کا بھی عزم ظاہر کیا۔ اس موقع پر جاوید جنید نے روایتی طور پر کمزور افراد کو بااختیار بنانے کے لئے کام کرنے کے تعلق سے پیپلز کانفرنس کی قیادت اور نقطہ نظر پر اعتماد ظاہر کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم تبدیلی لانے او ر عوام کو بااختیار بنانے کے لئے کوئی بھی کسر نہیں چھوڑیں گے۔اس موقع پر ضلعی صدر کپوارہ حفیظ اللہ میر،پی سی چیئرمین کے سیاسی سکریٹری رشید محمود، ضلعی صدر بدگام شاہد راشد اور پی سی کے ترجمان عدنان اشرف میر بھی موجود تھے۔

image_pdfimage_print