Kashmiri teachers shout slogans during a protest demonstration in Srinagar, India, Monday, July 16, 2007. Hundreds of teachers, who work on a daily wage basis, were injured when police used force to disperse them during a protest demanding permanent job and hike in their salary. A daily wage teacher is paid an average of USD$38 per month.
Voice of Asia News

کشمیری رہنما کھاتے پیتے تو بھارت کا ہیں مگرانکے دل پاکستان کیلئے دھڑکتے ہیں ،بی جے پی رہنما ارویندررینہ

مقبوضہ جموں(وائس آف ایشیا)بھارتی وزیرمملکت جیتندرسنگھ اور بی جے پی کے ریاستی صدر رویندررینہ نے حریت پسندوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیری قائدین کھاتے پیتے تو بھارت کا ہیں مگر ان کے دل پاکستان کیلئے دھڑکتے ہیں ،کبھی کبھی ایسا لگتا ہے کہ پاکستان کیخلاف ایئرسٹرائیک کی سب سے زیادہ چوٹ حریت پسندوں کو لگی ہے ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ہی متعارف کروائی گئی سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر شاہ فیصل کی پارٹی کو گلی کی کرکٹ ٹیم قرار دیتے ہوئے بھارتیہ جنتاپارٹی کے ریاستی صدر رویندررینہ نے کہاکہ ایسی جماعتیں ان لوگوں کی طرف سے روزانہ کی بنیادپر متعارف کروائی جاتی ہیں جواپنے محلے میں گلی کرکٹ کھیلتے ہیں ۔گوا کے وزیر اعلی و سابق وزیر دفاع منوہرپاریکر کی وفات کے سلسلے میں منعقدہ تعزیتی اجلاس کے حاشئے میں ذرائع ابلاغ سے بات کرتے ہوئے رینہ نے کہاکہ کشمیر کے لیڈران کی مشکل یہ ہے کہ وہ سہولیات اور کھاتے پیتے تو ہندوستان کا ہیں لیکن ان کے دل پاکستان کیلئے دھڑکتے ہیں ۔رینہ کاکہناتھاکشمیر میں ایس پی او خوشبو جان کی ہلاکت کی کسی نے مذمت نہیں کی لیکن اگر کوئی دوسرا واقعہ ہوتو سیاستدان شوپیاں بند اور پلوامہ چلو کی کال دیتے ہیں ، پی ڈی پی ، این سی اور شاہ فیصل خاموش ہیں اور انہوں نے کشمیر کے وطن پرست لوگوں کیلئے ایک لفظ تک نہیں کہا جو ملک کیلئے جانوں کا نذرانہ پیش کررہے ہیں ۔پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کے حقیقی مجاہدین کے ریمارکس پر بی جے پی لیڈر نے کہاہر ایک اس لیڈر کی اعتباریت سے واقف ہے، اقتدارسے باہر ہونے کے ساتھ ہی ان کا لہجہ بدل گیا ،ان کی حالت بناپانی کے مچھلی کی مانند ہے جو دوبارہ اقتدا رمیں آنے کیلئے کوشاں ہیں ۔اس موقع پر بھارتی وزیرمملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہاکہ کبھی کبھی ایسا لگتا ہے کہ پاکستان کے خلاف ایئر سٹرائیک کی سب سے زیادہ چوٹ کشمیر مرکزیت والی سیاسی جماعتوں کے لیڈران کو لگی۔نیشنل کانفرنس صدرفاروق عبداللہ کے گزشتہ روز کے بیان کے رد عمل میں انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم مودی نہیں بلکہ فاروق عبداللہ خود اپنے آپ کو خطرے میں محسوس کررہے ہیں۔ڈاکٹر جتیندر نے کہاکہ پارلیمانی انتخابات میں نوجوانوں کا رول اہم ہے اور ملک کی 60فیصد سے زائد آبادی 40سال سے کم عمر کی ہے ۔ان کاکہناتھاکہ بی جے پی عوام کے پاس ترقی کے مسائل لیکر ووٹ مانگنے جائے گی ۔پارٹی کے باغی لیڈر لعل سنگھ کی طرف سے انتخابات لڑنے کے فیصلے پر انہوں نے کہاکہ یہ جمہوریت کا جشن ہے جہاں ہر ایک الیکشن لڑ سکتاہے اور ہر ایک کسی کا خیر مقدم ہے ۔قبل ازیں پارٹی کی ایک میٹنگ منعقد ہوئی جس دوران لوک سبھا انتخابات کے حوالے سے تبادلہ خیال کیاگیا۔ میٹنگ میں رینہ کے علاوہ جتندر سنگھ، جگل کشور، کویندر گپتا، اشوک کول ، اشوک کھجوریہ ، ست شرما ، ضلع صدور اور دیگر سینئر لیڈران بھی موجود تھے ۔اس موقعہ پر کچھ کارکنان نے پارٹی میں شمولیت بھی کی ۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •