Voice of Asia News

بچوں پر جنسی تشدد کی آگاہی دینے والے اُستاد کی اپنی ہی طالبات سے ہی جنسی زیادتی

بھارت (وائس آف ایشیا) آج کل کے دور میں بچوں سے جنسی استحصال کے واقعات میں کئی گنا اضافہ ہو چکا ہے جس نے والدین کی پریشانی میں اضافہ کر دیا ہے۔ جنسی استحصال سے بچنے کے لیے بچوں کو اس حوالے سے باقاعدہ آگاہی دینے کی ضرورت ہے۔ لیکن بھارت میں بچیوں کو جنسی استحصال سے متعلق آگاہی دینے والا اُستاد ہی درندہ نکلا اور آگاہی کی آڑ میں کئی طالبات کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا۔تفصیلات کے مطابق بھارت میں ایک اسکول ٹیچر کو بچوں کو جنسی تشدد اور استحصال کی آگاہی دینے کی آڑ میں جنسی تشدد کا نشانہ بنانے پر گرفتار کر لیا گیا ہے۔ اسکول ٹیچر کو بچوں کی شکایت پر گرفتار کیا گیا۔ بچوں نے اسکول ٹیچر کے اس گھناؤنے فعل سے متعلق راچاکونڈا شی (Rachakonda SHE) ٹیم کو آگاہ کیا تھا جس پر فوری طور پر ایکشن لیا گیا۔

3 اپریل کو راچاکونڈا شی (Rachakonda SHE)ٹیم نے ایک اسکول میں جنسی تشدد اور ہراسانی کے حوالے سے ایک پروگرام منعقد کیا جس میں بچوں کو گُڈ ٹچ اور بیڈ ٹچ (Good touch and bad touch) کے حوالے سے آگاہ کیا گیا۔جس کے تھوڑی دیر بعد ہی اسکول کی کئی طالبات نے ٹیم سے رابطہ کیا اور شکایت کی کہ 26 سالہ اسکول ٹیچر گذشتہ دو برس سے انہیں ہراساں کر رہا ہے۔ مورٹھی نامی اسکول ٹیچر جنوری 2013ء سے اسکول کے ٹیچنگ اسٹاف کا حصہ ہے۔ طالبات نے بتایا کہ جب بھی اسکول ٹیچر مورٹھی کی مخالفت کی جاتی ہے تو وہ ہمیں تشدد کا نشانہ بناتے اور ہراساں کرتے ہیں اسی لیے آج تک کبھی کسی کو ان کے خلاف شکایت کرنے کی ہمت نہیں ہوئی۔ طالبات کی شکایت پر اسکول ٹیچر کے خلاف بھارتی پینل کوڈ کے سیکشن 354 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔ جبکہ مقدمے میں دیگر دفعات بھی شامل کی گئیں جس کے بعد اسکول ٹیچر کو گرفتار کر لیا گیا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •