Voice of Asia News

زندگی کی بنیادی سہولیات کے حوالے سے پاکستان کا بدترین ممالک میں شمار

لاہور(وائس آف ایشیا) زندگی کی بنیادی بہترین سہولیت دینے والے ممالک کی2019کی درجہ بندی کی رپورٹ جاری کی گئی ہے جس میں دنیا بھر کے اسی ممالک کے ہزاروں افراد سے لی گئی معلومات کوسروے کا حصہ بنایا گیا ہے۔اس رپورٹ کے مطابق پاکستان دنیابھر کے ممالک میں بدترین ممالک کے دس ملکوں میں شامل ہے جہاں ضروریات زندگی سے متعلق بنیادی چیزیں ملنا بھی مشکل ہیں۔آدھی سے زیادہ آبادی خط غربت سے نیچے زندگی گزار رہی ہے اور انہیں بنیادی سہولتیں یعنی کھانا،تعلیم اور صحت کی سہولتیں بھی میسر نہیں۔بہترین سہولتیں مہیا کرنے والے ممالک میں سب سے پہلے نمبر پرکینیڈا،سویڈن،ڈنمارک،ناروے اور سوئٹزرلینڈ شامل ہیں۔جبکہ اس لسٹ میں انڈیا کو 34ویں پوزیشن حاصل ہے۔خود کو سپر پاور کہلانے والا امریکہ بھی زندگی کی بہترین سہولتیں دینے والوں میں بہت پیچھے اور سترہویں پوزیشن پر ہے۔دنیا کے بد ترین ممالک میں سب سے آخر میں پاکستان،ایران اور عراق شمار کیے گئے ہیں۔سروے میں ان ممالک میں عوام کو دی جانے والی سہولیات میں تعلیم،صحت،اکنامک سٹیبیلٹی،فی کس آمدنی اور دیگر سہولیات کو شامل کیا گیا ہیے۔اس لسٹ میں سعودی عرب کو 41ویں نمبر سے نیچے آتے ہوئے39ویں نمبر پر دکھایا گیا ہے۔پاکستان سے متعلق رپورٹ میں شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ دہشت گردی کی وجہ سے ملک میں آمدنی اور وسائل کم ہوتے چلے گئے اور عام افراد زندگی کی بنیادی سہولیات سے متاثر اور محروم ہوئے ہیں۔وسائل کی کمی اور فی کس آمدنی میں کمی کی وجہ سے بھی لوگ خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔سروے کی یہ رپورٹ وارٹن سکول آف دی یونیورسٹی آف پنسلوانیہ کی طرف سے جاری کی گئی ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •