Voice of Asia News

افغانستان میں بم دھماکے کے نتیجے میں سات بچے ہلاک ، متعدد زخمی

کابل( وائس آف ایشیا ) افغانستان میں بم دھماکے کے نتیجے میں سات بچے ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوگئے۔تفصیلات کے مطابق افغان امن مذاکرات کا سلسلہ جاری رہنے کے باوجود ملک میں دہشت گرد حملے نہ رکے، صوبہ لغمان میں بم دھماکے سے 7 بچے مارے گئے، اور درجنوں زخمی ہوئے۔غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ مارٹر بم پھٹنے سے بچوں کی ہلاکتیں ہوئیں، مارے جانے والے بچوں کی عمریں 15 سال سے کم ہیں۔اسپتال ذرایع کے مطابق زخمیوں میں چار افراد کی حالت تشویش ناک ہے۔ دھماکے کی ذمہ داری اب تک کسی عسکریت پسند گروپ نے قبول نہیں کی۔البتہ اس نوعیت کے حملے ماضی میں طالبان کی جانب سے کیے جاتے رہے ہیں، تاہم اب تک واضح نہیں ہوسکا کہ یہ دہشت گرد حملہ کس نے کیا۔خیال رہے کہ اس سے قبل 22 دسمبر کو افغانستان کے شمالی صوبے فریاب میں ایک دھماکے کی زد میں آکر تقریبا 8 بچے ہلاک اور 6 زخمی ہو گئے تھے۔حال ہی میں افغان حکام اور طالبان کے درمیان مذاکرات کے باوجود طالبان نے افغانستان میں دہشت گرد حملے جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔افغان طالبان نے اعلان کیا تھا کہ وہ جلد ہی موسم بہار کے شروع ہونے پر نئے حملوں کا سلسلہ شروع کر دیں گے، حملوں کا مقصد ملک پر غیر ملکی افواج کے قبضے کا خاتمہ ہے۔یاد ہے کہ طالبان کی جانب سے یہ بھی کہا گیا تھا کہ مذاکرات کے ساتھ ساتھ ان کا جہاد بھی جاری رہے گا کیونکہ ابھی افغانستان کے ایک وسیع حصے پر غیر ملکی دستے قابض ہیں۔

image_pdfimage_print