Voice of Asia News

ٹویوٹا کے خالص منافع میں کاروباری سال 2018-19 ء کے دوران 24.5 فیصد کمی

ٹوکیو (وائس آف ایشیا) جاپانی موٹر ساز کمپنی ٹویوٹا نے کہا ہے کہ 31 مارچ کو ختم ہونے والے کاروباری سال 2018-19 ء کے دوران مصنوعات کی فروخت میں اضافے کے باوجود اس کے خالص منافع میں 24.5 فیصد کمی ہوئی جس کی وجہ سرمایہ کاری میں کمی ہے۔کمپنی کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق اپریل 2018 ء سے مارچ 2019 ء کے عرصے میں کمپنی کا خالص منافع 1.88 ٹریلین ین (17 ارب ڈالر) رہا جو گزشتہ سال کے اسی عرصے کے مقابلے میں 24.5 فیصد کم ہے۔کمپنی نے آئندہ سال کے دوران خالص منافع کی شرح بڑھ کر 2.25 ٹریلین ین (19.5 فیصد ) رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔ رپورٹ کے مطابق سال کے دوران ٹویوٹا مصنوعات کی فروخت کا حجم 30.23 ٹریلین ین رہا جو کہ ایک سال قبل کے اسی عرصے کے مقابلے میں 2.9 فیصد زیادہ ہے، سال کے دوران کمپنی کا آپریٹنگ منافع 2.47 ٹریلین ین رہا جو کاروباری سال 2017-18 ء کے مقابلے میں 2.8 فیصد زیادہ ہے۔کمپنی کا کہنا ہے کہ مارچ 2020 ء میں ختم ہونے والے موجودہ کاروباری سال کے دوران آپریٹنگ منافع 3.3 فیصد بڑھ کر 2.55 ٹریلین ین رہنے کی توقع جبکہ کمپنی مصنوعات کی فروخت کا حجم 0.7 فیصد کمی کے ساتھ 30 ٹریلین ین رہنے کا امکان ہے۔

image_pdfimage_print