Voice of Asia News

مکئی میں ایسے اجزا پائے جاتے ہیں جو نظام انہضام کے لئے انتہائی مفید ہوتے ہیں

لاہور(وائس آف ایشیا)مکئی اینٹی آکسیڈنٹ کا بہترین ذریعہ ہے۔ اس میں فینولک ایسڈ نامی کمپاؤنڈ پایا جاتا ہے جس کی وجہ سے جسم میں اینٹی آکسیڈنٹس بڑھتے ہیں۔ جن افراد کو ذیابیطس یا بلڈ پریشر کا مسئلہ ہو انہیں مکئی کا استعمال ضرور کرنا چاہیے۔ اس میں موجود فوٹو کیمیکلز کی وجہ سے خون میں اعتدال رہنے کی وجہ سے ذیابیطس کنٹرول میں رہتی ہے اور ساتھ ہی بلڈ پریشر نہیں ہوتا۔مکئی میں ایسے اجزا پائے جاتے ہیں جو نظام انہضام کے لئے انتہائی مفید ہوتے ہیں۔ اسے کھانے سے قبض دور ہونے کے ساتھ پیٹ ٹھیک رہتا ہے۔ مکئی میں وٹامن بی کی ایک قسم فولیٹ پائی جاتی ہے جس کی وجہ سے خون میں ایسی چیزیں پیدا نہیں ہوتیں جو دل کی بیماری پیدا کریں۔ جن کھانوں میں فولیٹ پایا جاتا ہے وہ دل کی صحت کے لئے انتہائی مفید ہوتی ہیں۔اگر آپ چاہتے ہیں کہ وزن کنٹرول میں رہے تو چاول کھانے کی بجائے مکئی کو ترجیح دیں۔ اس سے ملنے والی پروٹین کی وجہ سے کچھ ہی عرصے میں آپ کا وزن کم ہونے لگے گا۔ ایسے کھانے جن میں فائبر موجود ہو وہ جسم کے لیے بہت مفید ہوتے ہیں اور مکئی ایسے ہی کھانوں میں سے ایک ہے۔ فائبر کی وجہ سے معدہ ٹھیک رہتا ہے اور قبض نہیں ہوتی۔ وٹامن کی کمی سے ہونے والی خون کی کمی کو مکئی کھا کر باآسانی دور کیا جا سکتا ہے۔ اس میں آئرن کی وافر مقدار پائی جاتی ہے جو کہ جسم کو مضبوط بنانے میں مدد دیتی ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •